کے پی سی کے صدرامتیاز فاران پر حملہ قابل مذمت ہے، حسین محنتی

93

کراچی(نمائندہ جسارت)جماعت اسلامی سندھ کے امیرو سابق رکن قومی اسمبلی محمد حسین محنتی نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی پاکستان میں احیائے اسلام کے لیے جدوجہد کررہی ہے، جماعت اسلامی صحافت کی آزادی پر یقین رکھتی ہے،کراچی پریس کلب کے صدر امتیاز فاران پر حملے کی شدید
مذمت کرتے ہیں،تشدد اور دھونس دھمکیوں سے آزادی اظہار اور میڈیا کے نمائندوں کو اپنا ماتحت نہیں بنایا جاسکتا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو قبا آڈیٹوریم میں صحافی برادری کے اعزاز میں منعقدہ عید ملن پارٹی سے خطاب اور سوال و جواب کے دوران کیا۔ا س موقع پرنائب امیر جماعت اسلامی سندھ عبدالغفار عمر، جنرل سیکرٹری کاشف سعید شیخ،صوبائی سیکرٹری اطلاعات مجاہد چنا،ریاض صدیقی اور وزیرعلی جمالی بھی موجود تھے۔محمد حسین محنتی نے مزید کہا کہ ٹیکس نیٹ میں اضافے کی حمایت کرتے ہیں لیکن سرمایاکاروں اورعوام کو ڈرانے دھمکانے کی اجازت نہیں دے سکتے،کرپشن کے خلاف مؤثر اقدامات کرنے ہوںگے، پاناما لیکس میں شامل نواز شریف کو جیل لیکن باقی 3 سو سے زائد افرادکے خلاف کیا کارروائی ہوئی؟ کسی کو بھی پتا نہیں ہے،اے پی سی سے الگ اس لیے ہوئے کہ ہم عوامی مسائل پر اپنے پرچم اور اپنے منشور کے تحت شروع دن سے جدوجہد کررہے ہیں، اتحادی سیاست کے بہت تلخ تجربات سے گزرچکے ہیں، اپوزیشن اے پی سی میں اپنے دور حکمرانی میں کرپشن اور عوامی دولت کی لوٹ مار کی معافی طلب کرے تو بات ہوسکتی ہے کیونکہ ملک آج مہنگائی سمیت جن بحرانوں سے دوچار ہے اس کی ذمے داربھی سابق حکمران جماعتیں ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ سیاسی جماعتوں کے خلاف حالیہ نیب کی کارروائیوں میں حکومت میں شامل ہونے والے کرپٹ افراد کا بھی پیچھا کیا جائے اور صرف سیاستدانوں کے بجائے بیوروکریٹس اور جرنلز کی اقرباپروری کا بھی حساب کتاب ہونا چاہیے تاکہ عوام احتساب پر یقین کرسکیں۔آئندہ سال ہونے والے بلدیاتی الیکشن میں بھرپور حصہ لیں گے، جماعت اسلامی کی خدمات عوام کے سامنے ہیں، جماعت اسلامی کسی چور کو بچانے کے بجائے،جمہوری اور سیاسی کردار ادا کرتی رہے گی لیکن ہم کسی اور کی پچ پر نہیں کھیل سکتے،پاکستان میں عوام کے مسائل حل کرنے کے لیے ہم نے ہمیشہ بہترین کام کیا، خیبر پختونخوا حکومت میں2مرتبہ موجودہ امیر سینیٹر سراج الحق کی بطور وزیرخزانہ خدمات اور بجٹ میں عوام کے لیے کی گئی خدمات کو ہمارے دشمنوں نے بھی تسلیم کیا، کراچی میں عبدالستار افغانی اور نعمت اللہ خان اور بطور ایم ایم اے کے ارکان پارلیمنٹ کی شکل میں کراچی کے عوام کی ترقی اور خدمت کی،ملک کی تعمیر وترقی اورعوامی سوچ کو تبدیل کرنے کے لیے صحافی برادری اپنا بھرپور کردار ادا کرے۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ عوام تبدیلی کا مزاچکھ چکے ہیں، تبدیلی کے دعویداروں نے مدینے کی ریاست کے بجائے ریاست پاکستان کو معاشی، سیاسی اور ترقی کے حوالے سے ناکام ترین ریاست اور آئی ایم ایف کا غلام بناکر رکھ دیا ہے، بجلی،گیس، پیٹرول،سی این جی،چینی اور دیگر اشیا کی قیمتوں میں 2سوفیصد اضافے سے عوام کا جینا دوبھر کردیا گیا،روزگار دینے کی دعویدارحکومت میں لاکھوں افرادبے روزگار اور ایک وقت کی روٹی کے لیے ترس رہے ہیںاس لیے عوام عصبیت،مال ودولت کی چکاچوند اور جھوٹے نعروں کے بجائے اپنے خیرخواہ اور دیانتدار قیادت کو منتخب کرے، جماعت اسلامی نے دعوے نہیں بلکہ حقیقی طور پر بہترین فلاحی کام کرکے دکھایا ہے، زلزلہ ہو یا طوفان، بارشیں ہوں یا سیلاب جماعت اسلامی کے کارکنان اور الخدمت فائونڈیشن کے رضاکاروں نے ہمیشہ عوام کی بڑھ چڑھ کر خدمت کی ہے اس لیے اب عوام کو اپنے اور اپنی آنے والی نسلوں کی بہتری اور روشن مستقبل کے لیے جماعت اسلامی کا ساتھ دینا ہوگا،بصورت دیگر موجودہ مسائل سے چھٹکارا حاصل کرنا اور ایک فلاحی واسلامی ریاست کا خواب پایہ تکمیل نہیں پہنچ سکے گا۔
حسین محنتی