گیس قیمتوں میں 200 فیصد اضافہ ظلم کی انتہا ہوگی، سراج الحق

106

 

لاہور(نمائندہ جسارت) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ حکومت نے گیس کی قیمتوں میں 200 فیصد اضافے کا اعلان کر کے عوام کے اوسان خطا کردیے ہیں ۔ ایک بجٹ ابھی پاس نہیں ہوا کہ حکومت نے ضمنی بجٹ دے دیاہے ۔ جماعت اسلامی غریبوں کے لیے زندہ رہنے کا حق مانگنے کی تحریک چلا رہی ہے ۔ 30 جون کو کراچی کا
عوامی مارچ ملک میں مہنگائی ، بے روزگاری اور آئی ایم ایف کی غلامی کے خلاف عوامی ریفرنڈم ثابت ہوگا ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکومت بے حسی اور غریب دشمنی میں ساری حدیں پھلانگ چکی ہے ابھی پہلے بجٹ پر ایوانوں میں بحث ہورہی ہے کہ حکومت دوسرا بجٹ سامنے لے آئی ہے ۔ گیس ، بجلی اور تیل کی قیمتوں میں بار باراضافے نے لوگوں کی زندگی اجیرن کردی ہے ۔ روز بروز بڑھتی مہنگائی نے محنت کشوں ، مزدوروں اور ملازمین کے لیے 2 وقت کی باعزت روٹی کا حصول مشکل بنادیاہے ۔ موجودہ حکومت نے سب سے زیادہ پریشان سفید پوش طبقے کو کیاہے جس کے لیے اپنی سفید پوشی کا بھرم رکھنا مشکل ہوگیاہے ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکومت لٹیروں سے لوٹی گئی دولت نکلوانے اور بیرون ملک پڑے ہوئے 375 ارب ڈالر واپس لانے کے بجائے غریبوں کا خون نچوڑ کر آئی ایم ایف کی پیاس بجھانے کی کوشش کر رہی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ نیب کے پاس کرپشن کے 150 میگااسکینڈلز کی فائلیں پڑی منہ چڑا رہی ہیں ، ان کو کب کھولا جائے گا ۔انہوںنے کہاکہ اگر بیرون ملک پڑی چوری کی دولت میں سے آدھی بھی واپس آ جائے تو نہ صرف آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے قرضے اتر سکتے ہیں ، بلکہ عوام پر ٹیکسوں کا بوجھ ڈالنے اور بجلی تیل گیس کی بار بار قیمتیں بڑھانے کی بھی ضرورت نہیں پڑے گی ۔
سراج الحق