پنجاب میں سندھ سے زیادہ ایڈ ز کے مریض ،مراد علی شاہ نے علاج کیلیے ایک بلین روپے کی منظوری دیدی

54

ڈیرہ غازی خان،کراچی(خبر ایجنسیاں)پنجاب میں ایڈز کے وائرس ایچ آئی وی کے پھیلاؤ کی صورتحال سندھ کے شہر رتو ڈیرو سے بھی زیادہ ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔رتو ڈیرو میں ایچ آئی وی سے متاثرہ افراد کی تعداد 500 سے تجاوز کر چکی ہے جس میں بچوں کی بھی ایک بڑی تعداد شامل ہے۔اب پنجاب میں بھی 13 ہزار 400 سے زائد افراد کے ایچ آئی وی ایڈز سے متاثر ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔رپورٹ کے مطابق سب سے زیادہ ایڈز کے کیس ضلع ڈیرہ غازی خان میں رپورٹ ہوئے ہیں جہاں 3 ہزار سے زائد افراد ایچ آئی وی سے متاثر ہیں۔فیصل آباد میں بھی ایچ آئی وی متاثرین کی تعداد 2 ہزار 800  سے زائد ہے۔اسکریننگ کے دوران جیلوں میں موجود 3 ہزار قیدیوں میں بھی ایچ آئی وی کا وائرس پایا گیا۔علاوہ ازیںوزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے ایچ آئی وی/ ایڈز مریضوں کی امداد کے لیے 1 بلین روپے کا انڈومنٹ فنڈ قائم کرنے کی منظوری دیدی۔ ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کے مطابق یہ فنڈ 6 رکنی کمیٹی مینج کرے گی۔ کمیٹی میں وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچوہو،مقامی ایم پی اے، فنانس ڈپارٹمنٹ کا نمائندہ، ایک مختیار شخص، ایچ آئی وی/ ایڈز بیماری کا متعلقہ ماہر شامل ہیں۔کمیٹی کے ٹرمز آف ریفرنس سات ہیں جن میں ایچ آئی وی/ ایڈز کے مریض کے لیے فلاحی اسکیم شروع کرنا۔ ایچ آئی وی/ ایڈز کے مریض کی بحالی کے لیے مختلف پروگرام شروع کرنا۔ ایچ آئی وی/ ایڈزکے لیے عوام میں آگاہی پیدا کرنا۔ سرنج اور کنٹراسیپٹو کی قیمتیں محصول خاص کرنا۔ ایچ آئی وی/ ایڈز کی ادویات کی خریداری کرکے تقسیم کرنا۔ کمیٹی کو فنڈز کی بہترین انویسٹمنٹ کرنے کا اختیار بھی ہے۔ کمیٹی کو سرمایہ کاری فنڈز کا منافع شفاف طریقے سے خرچ کرنے کا بھی اختیار ہوگا۔ترجمان کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ایچ آئی وی/ ایڈز کی رو ک تھام کے لیے ہر ممکن اقدامات کرینگے۔ میں اس پروگرام پر عملدرآمد کرنے کی خود نگرانی کرونگا۔
ایچ آئی وی