یمن: 2015ء کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 91 ہزار سے متجاوز

85

نیوریاک (انٹرنیشنل ڈیسک) یمن میں 2015ء سے جاری لڑائی میں ہلاکتوں کی تعداد 91ہزار 600 تک پہنچ گئی۔ یہ اعدادوشمار غیر سرکاری تنظیم’’دی آرمڈ کنفلکٹ لوکیشن اینڈ ایونٹ ڈیٹا پروجیکٹ ‘‘نے اپنی تازہ رپورٹ میں پیش کیے ہیں۔ تنظیم نے حوثی باغیوں کے خلاف لڑنے والے سعودی عسکری اتحاد پر 8ہزار سے زائد یمنی شہریوں کو براہ راست نشانہ بنانے کا الزام عائد کیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق رواں برس حوثی باغیوں، سعودی عسکری اتحاد اور دیگر مسلح گروپوں کے ہاتھوں تقریبا 12ہزار افراد مارے جا چکے ہیں۔ دوسری جانب عرب اتحاد نے ایک بمبار ڈرون مار گرایا۔ اتحاد ی ترجمان کرنل ترکی مالی کے مطابق ڈرون طیارہ حدیدہ صوبے سے روانہ ہو کر حجہ صوبے کے شمال مشرقی علاقے کی جانب جارہا تھا۔ قبل ازیں ہفتے کے روز بھی سعودی فضائیہ نے ابہا شہر کی سمت آنے والے ایک ڈرون طیارے کو فضا میں تباہ کر دیا تھا۔ رواں ماہ سعودی فضائیہ نے حوثیوں کی جانب سے ابہا انٹرنیشنل ائرپورٹ اور خمیس مشیط کی جانب بھیجے جانے والے 5ڈرون طیاروں کو مار گرایا۔ کرنل مالکی کے مطابق حوثی ملیشیا مملکت میں سرکاری تنصیبات اور شہری مقامات کو نشانہ بنانے کی کوشش کر رہی ہے۔