قومی ٹیم نے پہلے بیٹنگ کرنے کا وزیراعظم کا مشورہ نہیں مانا

73

اسلام آباد( آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے قومی کرکٹ ٹیم کو مشورہ دیا تھا کہ بھارت کے خلاف ٹاس جیت کرپہلے بیٹنگ کی جائے تاہم قومی ٹیم نے مشورہ نہیں مانا۔ میچ شروع ہونے سے قبل وزیراعظم نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ بھارت کے خلاف جیت کی حکمت عملی سے کھیلنے کے لیے کپتان سرفراز احمد کو تجربہ کار بلے بازوں اور بولروں سے کھیلنا چاہیے کیوں کہ ‘ریلو کٹے’ دباؤ میں نہیں کھیل سکتے۔عمران خان نے پاکستان اور بھارت کے درمیان آج کھیلے جانے والے میچ سے قبل قومی ٹیم کے کپتان کو کچھ مشورے دیے اور اس میچ کے نتیجے میں سامنے آنے والے دباؤ کا ذکر اپنی مختلف ٹوئٹس میں کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ کپتان
سرفراز احمد کو لازمی ٹاس جیت کر بیٹنگ کرنی چاہیے اور جیت کی حکمت عملی کو مد نظر رکھتے ہوئے تجربہ کار بلے بازوں اور بولروں کے ساتھ میدان میں اترنا چاہیے کیوں کہ ‘ریلو کٹے’ دباؤ میں اکثر کم ہی پرفارم کرتے ہیں اور آج اسی سوچ کے ساتھ اترنا چاہیے۔ انہوںنے کہا کہ کھلاڑیوں کو شکست کے تمام خوف کو ذہنوں سے نکال کر دماغ کو صرف مثبت رکھنے کی ضرورت ہے، شکست کا خوف منفی اثر چھوڑتا ہے جس سے مخالف ٹیم کے خلاف حکمت عملی خراب اور غلطیاں شروع ہوجاتی ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ البتہ بھارتی ٹیم فیورٹ ہے لیکن شکست کے خوف کو پس پشت ڈالیں، صرف اچھا کرنے کی کوشش کریں اور میچ کی آخری گیند تک لڑیں جس کے بعد میچ کا جو بھی نتیجہ ہو اسے قبول کریں۔ قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور عمران خان نے مزید کہا کہ جب انہوں نے کرکٹ شروع کی تو خیال تھا کامیابی میں 70 فیصد ہاتھ ٹیلنٹ کا ہوتا ہے اور اس میں سوچ کا حصہ 30 فیصد ہوتا ہے لیکن کرکٹ ختم کی تو اندازہ ہوا کامیابی میں ٹیلنٹ اور سوچ کا ہاتھ ففٹی ففٹی ہوتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اپنے دوست گواسکر سے اتفاق کرتا ہوں کہ کامیابی میں ذہنی صحت کا حصہ 60 اور ٹیلنٹ 40 فیصد ہوتا ہے تاہم آج کامیابی میں سوچ کا تناسب 60 فیصد سے زائد ہوگا۔