جائداد کی خریدوفروخت پر 20فیصد ٹیکس کیلئے اقدامات شروع

106

کراچی (اسٹا ف رپورٹر)وفاقی حکومت کی ہدایت پرایف بی آرنے کراچی میں گھروںکے کرایے کی سرکاری شرح مقررکرنے اوراس پرٹیکس کے نفاذ کے لیے پراپرٹی سروے شروع کردیا ہے، جائیداد کی خریداری کے لیے لین دین پربھی 20 فیصد ٹیکس کے نفاذ کے لیے اقدامات شروع کردیے ہیں۔وفاقی حکومت کی ہدایت پر ایف بی آرکراچی سمیت صوبے بھرمیں ان ایکشن ہے پہلے مرحلے میں کراچی میں کرائے کے گھروں کے لیے رینٹ کی سرکاری شرح مقررکرنے کے لیے کام شروع کردیا ہے جس کے بعد مالک جائداد اپنے گھر، بنگلوز، مکان اورفلیٹ مقررہ سرکاری قیمت پرکرائے پردے سکیں گے اورسرکاری ریٹ کے حساب سے ان پرٹیکس کا بھی نفاذ ہوگا ، ایف بی آرکے ذرائع کے مطابق کرائے پردیے جانے والے مکان کے مالک کو 17 سے 25 فیصد ٹیکس ادا کرنا ہوگا اسی طرح کراچی میں ایک نام پرایک سے زیادہ گھر، پلاٹ، اپارٹمنٹ، بنگلا خریدنے والے کو بھی 10 سے 20 فیصد ٹیکس ادا کرنا ہو گا۔ اسٹیٹ ایجنسی کے قیام کے لیے بھی ایف بی آرنے 3 برس کے لائسنس کی فیس50 ہزارروپے مقررکرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اسٹیٹ ایجنسیوں کو مانیٹر کر کے سالانہ اسٹیٹ ایجنسی کی کمائی پر 25 فیصد ٹیکس کے نفاذ کے لیے اقدامات شروع کردیے ہیں۔ علاوہ ازیں کراچی میں گھر بنگلا پلاٹ فروخت کرنے والے پر5 فیصد ٹیکس کے نفاذ کی تجویز ہے ۔ اس سلسلہ میں ایف بی آر نے مکان ودیگرجائداد مالکان کو نئے قوانین کے تحت لانے کے لیے کراچی کے تمام تھانوں سے رسائی مانگ لی ہے ۔