بجٹ نے عوام کا مستقبل تاریک اور ملکی صنعت کو بند گلی میں دھکیل دیا،لیاقت بلوچ

91

لاہور (نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی و سیاسی و پارلیمانی امورکے انچارج لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ پاکستان اندرونی و بیرونی خطرات میں گھرا ہوا ہے ، قومی بجٹ نے عوام کا مستقبل تاریک اور ملکی صنعت و زراعت کو بند گلی میں دھکیل دیا ، معاشی بحران نے پورے ملک کو پریشانیوں میں مبتلا کررکھا ہے ،سیاسی بحران اقتصادی تباہی میں اضافہ کررہا ہے ،مہنگائی ،بے روزگاری اور آئی ایم ایف کی غلامی نے ملک و قوم کو مستقبل کے حوالے سے شدید بے چینی کا شکار کردیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے 16جون لاہور میں عوامی مارچ میں عوام کی شرکت کے لیے مال روڈ ، ہال روڈ ،بیڈن روڈ اور وحدت روڈ پر تاجروں،ریڑھی بانوں ،رکشہ والوںاور عام شہریوں میں پروگرام کے پمفلٹ تقسیم کرنے کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد، محمود الاحد ،احمد سلمان بلوچ ،عبد العزیز عابد، میاں رشید احمد اور دیگررہنمابھی موجود تھے ۔لیاقت بلوچ نے کہا کہ اقتصادی مشکلات مسلسل بڑھتی جارہی ہیں جس کی ذمے دار ماضی کی سول اور ملٹری حکومتیں ہیں ،لیکن انتخابات 2018ء کے بعد تبدیلی سرکار سے بڑی توقعات تھیں جبکہ عمران حکومت نے اپنی حکومت کے پہلے سال میں ہی فیصلوں کی تاخیر ،آئی ایم ایف سے معاہدے میں ذلت آمیز اناڑی پن اور اسلوب حکمرانی نے بحران کو شدید کردیا ہے ۔جس سے مہنگائی ،بے روز گاری ،بے یقینی اور خوف کی وجہ سے اقتصادی نظام جام ہوگیا ہے ۔قومی بجٹ نے عوام کا مستقبل تاریک اور ملکی صنعت و زراعت کو بند گلی میں دھکیل دیا ہے ۔لیاقت بلوچ نے کہا کہ عوام ،نوجوانوں اور خواتین کو اپنے معاشی حقوق کے تحفظ کے لیے میدان میں نکلنا ہوگا۔قومی معیشت آئی ایم ایف کے قبضے میں چلی گئی ہے ۔ اقتصادی پالیسیاں آئی ایم ایف کی کمانڈ پر بن رہی ہیں ۔ اغیار کی اقتصادی غلامی عزت و وقار اور آزادی کو پامال کردے گی۔ جماعت اسلامی 16جون کو لاہور میں عوامی مارچ کرے گی جس میں عوامی جذبات کی ترجمانی اور آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا۔