خواجہ برادران کے ریمانڈ میں14 روز کی توسیع ،آشیانہ اور رمضان شوگر مل کیس میں گواہان طلب

45

لاہور(نمائندہ جسارت)احتساب عدالت نے پیرا گون ہائوسنگ کیس میں خواجہ برادارن کے مزید 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کر دی،عدالت نے خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق کو دوبارہ 27 جون کوپیش کرنے کا حکم دیدیا۔جمعرات کو احتساب عدالت میں پیراگون ہاؤسنگ کیس کی سماعت ہوئی۔عدالت نے پیراگون ہائوسنگ کیس میں خواجہ برادارن کے مزید 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کر دی،عدالت نے خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق کو دوبارہ 27 جون کوپیش کرنے کا حکم دیدیا۔اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ حکومت کاپہلابجٹ آئی ایم ایف کابنایاہواہے،بجٹ کاعوام کے خوابوں سے کوئی لینادینانہیں،حکومت نے غریب دشمن بجٹ پیش کیا۔ انہوںنے کہا کہ عمران خان نے رات کو چوروں کی طرح تقریر کی،عمران خان کی تقریرسے لگتاہے ان سے حکومت نہیں چل رہی، عمران خان کے جانے کا وقت آگیا ہے، عمران خان کی حکومت کا خاتمہ ہونے کو ہے انہوںنے کہا کہ ہم حکومت گرانہیں رہے،یہ خودہی گرجائے گی،عمران خان حکومت کرنے کاشوق پورا کرلیں،احتساب کے نام پرعوام کی توجہ حکومت سے ہٹائی جارہی ہے۔علاوہ ازیںلاہور کی احتساب عدالت نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکیم اور رمضان شوگر ملز کیس میں گواہوں کو شہادتوں کے لیے طلب کرلیا۔ احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے کیس کی سماعت کی ۔ عدالتی حکم پر شہباز شریف پیش ہوئے۔عدالت نے استفسار کیا کہ حمزہ شہباز کہاں ہیں۔ نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ حمزہ شہباز کو جسمانی ریمانڈ پر ہونے کے باعث پیش نہیں کیا گیا۔ عدالت نے رمضان شوگر ملز کیس کی سماعت 26 جون تک ملتوی کر دی اور آئندہ سماعت پر حمزہ شہباز کو پیش کرنے کی ہدایت کی۔ دوران سماعت شہباز شریف نے کہا کہ عدالت سے کچھ کہنا چاہتا ہوں، جس پر عدالت نے کہا کہیں آپ کیا کہنا چاہتے ہیں۔ شہباز شریف نے کہا کہ میرا علاج لندن میں ہو رہا تھا، علاج کے لیے بیرون ملک میں رہا، شہباز شریف نے بیان دیا کہ میری آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم کیس میں کوئی کرپشن نہیں پکڑی گئی ،برسوں تک قوم کی خدمت کی،مجھ پر جھوٹے اوربے بنیاد ریفرنس بنائے گئے ہیں۔ شہباز شریف نے عدالت کے رو برو بیان دیتے ہوئے کہا کہ میں نے قوم کے اربوں روپے بچائے، نیب قوم اور عدالت کا وقت ضائع کر رہا ہے ۔
گواہان طلب