پاکستان میں 2 کروڑ سے زائد بچے محنت مزدوری کر رہے ہیں

48

لاہور (نمائندہ جسارت) پاکستان تحریک انصاف نے چائلڈ لیبر کے مکمل خاتمے کے مطالبے کی قرارداد پنجاب اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کروادی ۔ تحریک انصاف کی رکن پنجاب اسمبلی مسرت جمشید چیمہ کی جانب سے جمع کروائی گئی قرار داد کے متن میں کہا گیا ہے کہ دنیا بھر میں 12جون کا دن بچوں پر جبری مشقت کے خلاف عالمی دن یعنی چائلڈ لیبر ڈے کے طور پر منایا جاتا ہے۔ چائلڈ لیبر ڈے پر پاکستان سمیت دنیا بھر میں مختلف تقریبات کااہتمام کیاجاتا ہے۔ تاکہ محنت کش بچوں کے مسائل کوحکومت و دیگر ذمے داران تک موثر طریقے سے پہنچایا جا سکے۔ پاکستان میں ایک سروے رپورٹ کے مطابق دو کروڑ سے زائد بچے محنت و مزدوری کر رہے ہیں۔ پاکستان میں غربت ،بے روزگاری اور مہنگائی کی وجہ سے کروڑوں بچوں کے لیے سکول اور تعلیم ایک خواب ہے اور وہ محنت و مزدوری سے منسلک ہیں۔ پاکستان میں سابقہ ادوار کی تمام حکومتیں بچوں کو ان کے حقوق دینے اور چائلڈ لیبر کے خاتمے میں مکمل طور پر ناکام رہی ہیں۔ یہ ایوان یہ بھی تسلیم کرتا ہے کہ پاکستان میں بچوں کے حقوق سلب کیے جا رہے ہیں۔بچے گھروں، بھٹوں، کارخانوں، ورکشاپس اور دکانوں پر محنت مزدوری کرتے نظر آتے ہیں۔تحریک انصاف کا منشور تھا کہ بچوں کو ان کے حقوق دلوائے جائیں گے اور پاکستان سے چائلڈ لیبر کا مکمل خاتمہ کیا جائے گا۔12جون 2019ء کو چائلڈ لیبر ڈے کی مناسبت یادگار بنایا جائے۔قرارداد میں وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ پاکستان سے چائلڈ لیبر کے مکمل خاتمے کے لیے بھرپور اقدامات اٹھانے کے لیے چائلڈ لیبر پالیسی پیش کی جائے اور ملک بھر میں سختی سے اس پالیسی پر عملدرآمد کرایا جائے۔