گیس بجلی کی عدم دستیابی سے معیشت اور زراعت تباہ ہوگئی، عبدالحق ہاشمی

80

 

کوئٹہ (نمائندہ جسارت) جماعت اسلامی کے صوبائی امیر مولانا عبدالحق ہاشمی نے کہا کہ بجلی گیس قیمتوں میں اضافہ اور سخت گرمی میں بلوچستان کے دیہات میں 18 سے 20 اور شہروں میں 10 سے 12 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے بلوچستان کی زراعت ومعیشت کی تباہی کیساتھ عوام کے مسائل میں بدترین اضافہ ہوا ہے، بلوچستان کے عوام بجلی گیس کے بل بروقت جمع کرتے ہیں مگر حکمران صوبے میں انڈسٹری نہ ہونے و بجلی کے کم استعمال کے باوجود بدترین لوڈشیڈنگ کرکے عوام کو پریشان کررہے ہیں کم وولٹیج کی وجہ سے عوام کی قیمتی اشیا ناکارہ ہوگئی ہیں۔ عوام وکسانوں کے احتجاج کے باوجود حکومت ٹس سے مس نہیں ہورہی، منتخب نمائندوں کی لوڈشیڈنگ وعوامی مسائل پر خاموشی لمحہ فکر ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجلی کی بدترین وغیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا رمضان کے بعد دوبارہ شروع ہونا حکومت و انتظامیہ کی نااہلی اور منتخب نمائندوں کی ناکامی ہے، منتخب عوامی نمائندے مظلوم بلوچستان کے غریب عوام وکسانوں کے لیے آواز بلند کریں اور صوبے کے تمام اضلاع کو گیس وبجلی کی فراہمی کیساتھ صوبہ بھر کو گیس وبجلی کی لوڈشیڈنگ سے استثنا دیا جائے۔ گیس بجلی کی لوڈشیڈنگ سے بلوچستان کے عوام ومعیشت اور زراعت تباہ ہو کر رہ گئی ہے، ٹیوب ویلز شمسی توانائی پر منتقل ہونے، اکثر گھریلو صارفین کی جانب سے بجلی کے متبادل استعمال کے باوجود بلوچستان میں بجلی کی لوڈشیڈنگ جاری ہے، جو اس بات کو ظاہر کررہی ہے کہ بجلی کی قلت نہیں، حکومتی نااہلی وصوبے کیساتھ وفاق کی زیادتی اور واپڈا اہلکاروں کی عادت وبلوچستان کے عوام کیساتھ زیادتی کے سوا کچھ نہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ بلوچستان میں بجلی کا استعمال ملک بھر میں کم ہوتا ہے مگر لوڈشیڈنگ ملک بھر کی نسبت زیادہ، یہ بلوچستان کے عوام، زمینداروں وکسانوں اور ہر طبقے کیساتھ زیادتی ہے۔ بلوچستان کیساتھ ہر معاملے میں سوتیلا سلوک نے یہاں کے عوام میں رد عمل واحساس محرومی پیدا کردی ہے۔ بلوچستان کے عوام کو معاشی آئینی حقوق دینا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ سخت گرمی میں صوبائی دارالحکومت کوئٹہ سمیت بلوچستان بھر میں بجلی کی بندش سے گھریلو اور کاروباری زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی ہے۔ سردی کی شدت بڑھتے ہی گیس ناپید و لوڈشیڈنگ جبکہ سخت گرمی میں جب عوام کو بجلی کی ضرورت ہوتی ہے تو بجلی کی بدترین وغیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ شروع ہوجاتی ہے۔ صبح وشام بجلی کی لوڈشیڈنگ، عدم فراہمی سے گھریلو زندگی بری طرح متاثر ہورہی ہے۔