بجٹ میں فیڈریشن کی تجاویز کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا ،مرزا عبد الرحمان

58

کراچی(اسٹاف رپورٹر) فیڈریشن پاکستان چیمبرز آف کامرس کی ا یگزیکٹو کمیٹی ممبر اور سابق نائب صدر مرزا عبد الرحمان نے کہاہے کہ ایف پی سی سی آئی کی ناکام پالیسیز کی بناء پر حالیہ بجٹ میں فیڈریشن کی تجاویز کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا اور بزنس کمیونٹی کو فیڈریشن نے ایکبار پھر مایوس کیا۔گزشستہ روزحالیہ بجٹ پر بحث کے لیے فیڈریشن پاکستان چیمبر آف کامرس کے مرکزی آفس سمیت تمام زونل آفسز میںملک بھر کے تمام چمبرز اور ایسوسی ایشنز کا اجلاس طلب کیا گیا تھا جو بری طرح ناکام ہوا۔ کیونکہ کراچی ، لاہور اور اسلام آباد کے دفاتر میں حاضری نہ ہونے کے برابر تھی بمشکل35- سے 40 افراد شریک تھے جو سب سے کمزوز حاضری تھی جن میں اکشریت یوبی جی کے ذاتی دوست تھے۔ اسلام آباد سے اٹک چمبر سمال چیمبر نے شرکت کی اور لاہور سے صرف بیس لوگ شامل تھے اور کراچی سے تقربیا 17 افراد شامل اکثریت یوبی جی کے ذاتی دوست تھے۔ اور یوبی جی کے سربراہ کراچی سے اپنی بے بسی کا اظہار کر رہے تھے۔ای سی ممبر فیڈریشن پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری مزاز عبدالرحمان نے پریس ریلز جاری کرتے ہوا کہا کہ گزشتہ کئی ماہ سے فیڈریشن کی قیادت جس میں یوبی جی راہنما شامل ہے حکومت کی منت سماجت کرتے رہے کہ پانچ زیرو ریٹڈ سکیرز پر فیڈریشن کی تجویز شامل کی جائے لیکن باوجود اخبارات میں اشہتارات کے ذریعے حکومت سے منٹ سماجت کی گئی۔