مختاراں مائی ریپ کیس:ملزمان کی بریت کیخلاف نظرثانی درخواست خارج

56

اسلام آباد( آن لائن ) عدالت عظمیٰ نے مختاراں مائی ریپ کیس میں ملزمان کی بریت کے خلاف دائر نظرثانی درخواست خارج کر دی۔جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔دوران سماعت عدالت عظمی نے ریمارکس دیے کہ درخواست میں اٹھائے گئے نکات کو کسی دوسرے کیس میں زیر غور لائیں گے۔جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ اپیل میں اٹھائے جانے والے نکات نظر ثانی میں شامل نہیں کیے جا سکتے اور نظرثانی میں صرف فیصلے کی غلطی کا بتایا جاتا ہے۔انہوں نے مزید ریمارکس دیے کہ آپ کیس کو مختصر کریں ورنہ یہ 10 سال یونہی پڑا رہے گا۔جس پر وکیل اعتزاز احسن نے عدالت کو بتایا کہ فیصلے میں لکھا گیا کہ مختاراں مائی کے جسم پر زخم کا کوئی نشان نہیں لیکن میں ریکارڈ سے بتائوں گا کہ جسم پر زخم کے نشان تھے۔انہوں نے مزید کہا کہ آیا جرح میں ملزم کا اعتراف دفاع کو متاثر کرے گا، جرم دور دراز علاقے میں ہوا۔جسٹس گلزار نے ریمارکس دیئے کہ کیس میں معروضات لکھوا دیں کسی دوسرے کیس میں ان نکات کا جائزہ لیں گے۔جس کے بعد عدالت عظمی نے مختاراں مائی کی جانب سے ملزمان کی بریت کے خلاف دائر نظرثانی درخواست خارج کردی۔