بجٹ عوام کے لیے شدید مشکلات لے کر آئے گا، انتخاب سوری

38

کراچی (اسٹاف رپورٹر) ہیومن رائٹس نیٹ ورک کے صدر انتخاب عالم سوری نے کہا ہے مالی سال 2019-20ء کا بجٹ عوام کیلیے شدید مشکلات لے کرآئے گا۔بجٹ میں 36 نئے ٹیکس لگائے گئے ہیں۔ ٹیکسز کے نفاذ کا سارا بوجھ عوام پر منتقل ہوگا اورغریب طبقہ مزید مالی مشکلات کا شکار ہو گا۔یہ بات انہوں نے نئے مالی سال کے مجوزہ بجٹ پر اپنے ردعمل میں کہی ۔انتخاب عالم سوری نے کہا کہ خشک دودھ اورپنیرپر 10فیصد ٹیکس عائد کرنے کی تجویز دی گئی ہے، جبکہ چینی کے ساتھ ،چکن، بیف ،مٹن اورمچھلی سے تیار اشیا پرٹیکس 17 فیصد کرنے کی تجویز ہے۔ جی ایس ٹی کی شرح 17 فیصد برقراررکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انتخاب عالم سوری نے کہا کہ ضروریات زندگی پر ٹیکس لاگو ہونے سے ٹیکس ادا کرنے والے اس کا بوجھ عوام پر منتقل کرتے ہیں اور یہ عوام کو دینا پڑتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کمپنی کوکنگ آئل کی فی لیٹر قیمت حکومت آنے سے قبل165 روپے تھی جو اس وقت 200تک پہنچ چکی ہے ،بجٹ آنے اورٹیکس کے نفاذ کے بعد قیمتیں آسمان کوچھو جائیں گی اورلوگ اشیا ئے ضروریہ سے بھی لوگ محروم ہوجائیں گے۔