وزیر اعظم کی ذہنی کیفیت کی تفتیش کیلئے بھی کمیشن بنایا جائے، شاہد خاقان

107

سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن)کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ عمران خان نے دھمکی دی احتساب کروں گا، وزیر اعظم کی ذہنی کیفیت کی تفتیش کیلئے کمیشن بنایا جائے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن)کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ نیلم جہلم منصوبے پر 500 ارب روپے خرچ ہوئے، پورے ملک میں بجلی کا جال بچھایا اور قرضوں سے دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑی جب کہ 10 ہزار ارب کے قرضوں سے تمام ترقیاتی کام ہوئے، عمران خان نے دھمکی دی احتساب کروں گا، ہائی پاور کمیشن بنانا حکومت کی مرضی ہے، کمیشن کے سامنے جانے کے لیے تیار ہوں اور حقائق سامنے رکھوں گا۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پاکستان پر 10ہزار ارب کے قرضوں کا اضافہ ہو گا، موجودہ حکومت ہمارے منصوبے ہی مکمل کرے گی جب کہ 50 ہزار گھروں کے لیے حکومت کے پاس پیسے نہیں، ایک کروڑ نوکریوں کے بجائے 30ہزار نوکریاں جانے کا خدشہ ہے۔

رہنما(ن) لیگ نے کہاکہ ملک میں افراط زر 3 گنا ہو جائے گا اور ترقی کی رفتار نصف ہو جائے گی،(ن )لیگ نے 9 ہزار ارب صوبوں کو دیا جب کہ 5 ہزار ارب سود کی ادائیگی پر دیا گیا، عمران خان فائلیں پڑھ لیتے تو رات 12 بجے تقریر نہ کرنا پڑتی۔ بتائیں نوازشریف کی حکومت میں کون سی کرپشن ہوئی؟،شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ 72سال میں کبھی کسی وزیراعظم نے رات 12 بجے قوم سے خطاب نہیں کیا، وزیراعظم کی ذہنی کیفیت کی تحقیقات کے لیے کمیشن بنایا جائے۔