فائز عیسیٰ پر دائر ریفرنس  کی کاپیوں کو آگ لگادیں  گے ‘امان اللہ کنرانی

26

 

کوئٹہ ( نمائندہ جسارت )سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر امان اللہ کنرانی ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ عدالت عظمیٰ کے جج قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف دائر ریفرنس آئین کے آرٹیکل
10A/25 کی خلاف ورزی ہے ۔ 14 جون کووکلاریفرنس کی کاپی کو عدالت عظمیٰ بلڈنگ کے داخلی دروازے پر آگ لگا کر اپنی نفرت کااظہار کر یں گے ۔کوئٹہ پریس کلب میں وکیل رہنمائوں کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے امان اللہ کنرانی ایڈووکیٹ کاکہناتھاکہ اس وقت ملک کو داخلی وخارجی خطرات کاسامنا ہے لیکن ادارہ جاتی رویوں کو اپناتے ہوئے یکجہتی کامظاہرہ باہمی تنازعات اور تضادات کو کم کرنے کے بجائے مفروضوں کی بنیاد پر عدالت عظمیٰ کے جج جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف ریفرنس دائر کردیا گیا ہے بلکہ اسے صفائی کا موقع بھی نہیں دیا گیا ہم ایف بی آر کی جانب سے حتمی کارروائی سے قبل عجلت میں ریفرنس دائر کرنے کو آئین کے بنیادی حقوق سے متعلق آرٹیکل 10A/25کی صریحاََ خلاف ورزی سمجھتے ہیں کیونکہ یہ آئین کے بنیادی ڈھانچے سے متصادم ہیں ، ہم فرزند بلوچستان کو چیف جسٹس آف پاکستان بننے سے روکنے کی کوشش سمجھتے ہیں بلکہ بلوچستان جائز حق نمائندگی سے بھی محروم ہوگا،ؔ انہوں نے کہاکہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف دائرکردہ ریفرنس پر جہاں پوری قوم اٹھ کھڑی ہوئی ہے وہیں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن نے پہل کرتے ہوئے 30مئی کو اسلام آباد میں ہونے والے اجلاس میں متفقہ طورپر14جون کو سپریم کورٹ کے جج جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف ریفرنس کی سماعت کے موقع پر ان سے اظہار یکجہتی کااعلان کیا۔
امان اللہ کنرانی