وفاقی بجٹ ٹیکسوں میں اضافے کے سوا کچھ نہیں، حافظ طاہر مجید

38

 

حیدرآباد(اسٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی ضلع حیدرآباد حافظ طاہر مجید نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی نے عوامی نہیں آئی ایم ایف کا بجٹ پیش کیا ہے،بجٹ قیمتوں اور ٹیکسوں میں اضافے کے سوا کچھ نہیں ہے، اشیائے خوردونوش اور تعمیراتی سامان کو مزید مہنگا کردیا گیا ہے جس سے مہنگائی میں مزید اضافہ ہوگا، مہنگائی آسمان سے باتیں کررہی ہے مگر تنخواہ دار طبقے کی تنخواہوں میں محض 5 سے 10 فیصد کا معمولی اضافہ کیا ہے، ایک سال میں مہنگائی تنخواہوں میں اضافے سے کئی گنا بڑھ چکی ہے پچاس ہزار روپے مہینہ کمانے والے پر بھی مزید ٹیکس لگادیا ہے۔ایوان وزیراعظم، وزرا ، مشیران اور معاونین کے منظور نظر افسران کی مراعات میں اضافہ کردیا ہے وفاقی بجٹ آئی ایم ایف کا ہے جسے مشیرخزانہ،چیئرمین ایف بی آر اور گورنر اسٹیٹ بینک پر مشتمل آئی ایم ایف کی ٹیم نے بنایا یے اور اسے
پیش کرنے کا اعزاز پی ٹی آئی حکومت کو حاصل ہے،پی پی،ن اور مشرف کے لوگ اب پی ٹی آئی کا اثاثہ ہیں جو برساتی مینڈکوں کی طرح ہر دور کے حکمران کے ساتھ نظر آتے ہیں،ان لوگوں نے مدینہ طیبہ کے مقدس نام کو باربار اپنے مذموم مقاصد کے لیے استعمال کیا ہے،یہ نام مدینہ لیتے ہیں اور کام یہود و نصاریٰ کے کرتے ہیںبہتر ہوتا کہ عمران خان خود کو کرکٹ تک محدود رکھتا،انہوں نے 10مہینے میں جو ناکامی اور ذلت اٹھائی ہے وہ پی پی اور لیگ نے اپنے 3،3ادوار میں حاصل کی ہے عوام ایسے بجٹ کو مسترد کرتے ہیں۔
حافظ طاہر مجید