شمائلہ محمود کو بری کیا جائے، تمام الزامات غلط ہیں، وکیل

24

اسلام آباد(آن لائن)احتساب عدالت نمبر 2 کے جج محمد ارشدملک کی عدالت نے نندی پورپروجیکٹ میں تاخیرسے سرکاری خزانے کونقصان کے ریفرنس میں شریک ملزمہ شمائلہ محمودکی طرف سے بریت کی درخواست پردلائل جاری،عدالت نے سماعت ملتوی کردی۔گزشتہ روزسماعت کے دوران سابق وفاقی وزیربابراعوان عدالت میں پیش ہوئے۔اس موقع پرشریک ملزمہ شمائلہ محمودکی طرف سے دائر بریت کی درخواست پر ان کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ شمائلہ محمود پر لگائے گئے تمام الزامات غلط ہیں،انہیں بری کیا جائے،اگر وزارت قانون سمری اپروو کر بھی لیتی تو بھی آج ہم ریفرنس بھگت رہے
ہوتے،وزارت پانی و بجلی کے عہدیداران نے ذاتی مفاد حاصل کیا اور تمام بوجھ وزارت قانون پر ڈال دیا،ریفرنس میں تاخیر پر قائم کمیشن نے اپنی رپورٹ پیش کی، جس میں ذمے داران کا تعین کیا گیا۔وکیل ملزم ریاض کیانی نے کہاکہ ملزم ریاض کیانی اس عہدے پر صرف2 ماہ کے لیے رہے۔ اس پرعدالت نے کہاکہ میں یہی چاہتا ہوں کہ اس بنیادی نقطے پر بات کریں اوپر اوپر بات کر کے چلے جاتے ہیں یہ ایک قانونی نقطہ ہے، اب شواہد کا جائزہ لیے بغیر بری کس طرح کیا جا سکتا ہے،جس پروکیل نے کہاکہ نیب نے اس ریفرنس میں بالکل تفتیش نہیں کی بلکہ کمیشن کی رپورٹ کو ریفرنس بنا دیا۔اس موقع پرعدالت کی طرف سے وقفہ کیاگیا،جس کے بعدسماعت شروع ہونے پر جج محمد ارشد ملک کی طبیعت ناسازہونے کے باعث سماعت3جولائی تک کے لیے ملتوی کردی۔
نندی پور کیس