تیس رنز۔5وکٹیں۔عامر نے ناقدین کو جواب دیدیا

61

کراچی (سید وزیر علی قادری) انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے زیر اہتمام 12ویں ورلڈ کپ کے سلسلے میں کھیلے گئے آسٹریلیا اور پاکستان کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان میچ میں اسکواڈ میں ناقدین کا سب سے زیادہ شکار ہونے والے مایہ ناز فاسٹ بولر محمد عامر نے آسٹریلیا کے خلاف ورلڈ کپ میچ میں کیریئر بہترین بولنگ کرتے ہوئے 30 رنز کے عوض 5 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی۔ اس سے قبل 28 رنز کے عوض 4 وکٹیں ان کے کیریئر کی بہترین بولنگ تھی، عامر نے اب تک 54 میچز میں 70 وکٹیں لے رکھی ہیں۔گزشتہ روز کھیلے گئے ورلڈ کپ کا17واں اور پاکستان کا چوتھا میچ جو نائوئٹن کے میدان میں گرین شرٹس کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا جو شکست کی بنیاد پر تو صیح فیصلہ نہیں تھا مگر پہلے بولنگ کرتے ہویے مخالف ٹیم آسٹریلیا کے سامنے مرد آہن بن کر اسکور روکنے والے بولر محمد عامر نے اپنی ٹیم میں شمولیت کو ایک مرتبہ پھر درست ہی نہیںبلکہ سلیکشن کمیٹی اور پی سی بی انتظامیہ پر واضح کردیا کہ اس کے بغیر پاکستان کی کرکٹ ٹیم ادھوری ہے۔ اور اگر پاکستان نے ورلڈ کپ میں لاسٹ 4میں جگہ بنانی ہے تو فاسٹ بولر کی سوئنگ اور ایکشن سے بھرپور نوجوان عامر کو صیح وقت پر استعمال کرنا ہوگا۔ محمد عامر کی اس کامیاب اور جارحانہ بولنگ کے پیچھے سابق کرکٹر وسیم اکرم کا نام لیا جارہا ہے۔ جس طرح محمد عامر نے بولنگ کراتے وقت کلائی کی پوزیشن کا استعمال کیا ہے وہ وسیم اکرم کی طرف سے اس کو دی گئی ٹپس کا حصہ ہے۔ امید کی جارہی ہے کہ آئندہ 16جون کو ہونے والے بھارت کے خلاف میچ میں پاکستان کے کامیاب بولر محمد عامر کے جارحانہ انداز اور خطرناک بولنگ کو روکنے کے لیے بھارتی بلے بازوں پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔ اور عین ممکن ہے کہ اس سلسلے میں بیٹنگ آرڈر بھی تبدیل ہو۔ تاہم پاکستان کی آسٹریلیا کے خلاف میچ میں شکست کو پوری قوم اور شائقین نے مایوس کن قرار دیا ہے اور بھارت سے مقابلے کو بہت اہمیت دی جارہی ہے ۔ پاکستان فاسٹ بولر محمد عامر نے آسٹریلیا کے خلاف میچ میں5 وکٹیں حاصل کرلیں جس کے بعد وہ ورلڈ کپ کے بہترین بولر بن گئے ۔عامر کی ٹورنامنٹ میں مجموعی وکٹوں کی تعداد اب10 ہوگئی ہے ۔5وکٹوں کے علاوہ عامر کا اکانومی ریٹ بھی انتہائی شاندار رہا۔