صوبائی بجٹ میں وزرا کی تنخواہیں 10 فیصدکم کردیں، شوکت یوسف زئی

72

پشاور (آن لائن) خیبر پختونخوا کے وزیر اطلاعات شوکت علی یوسفزئی نے کہا ہے کہ نئے مالی سال کا صوبائی بجٹ 18 جون کو پیش کیا جائے گا، معاشی مشکلات کے باعث خیبر پختونخوا کے بجٹ میں صوبائی وزراء کی تنخواہوں میں 10 فیصد کمی کرنے اور مزدوروں کی کم از کم تنخواہ بڑھا کر 17 ہزار 500 روپے کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ترقیاتی بجٹ میں اضافہ کیا گیا ہے جبکہ وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر اخراجات میں کمی کی جا رہی ہے۔ شوکت یوسف زئی نے کہا کہ وفاقی حکومت نے 1 سے 16 گریڈ تک کے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 10 فیصد اضافہ کیا ہے جو ہم بھی کر رہے ہیں تاہم گریڈ 17 تا 20 کی جگہ گریڈ 17 تا 19 کی تنخواہوں میں 5 فیصد اضافہ کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ محمود خان کی کوشش ہے کہ حکومتی اخراجات میں کمی لائی جائے اور صرف وہی اخراجات کیے جائیں جو ناگزیر ہوں۔ شوکت یوسفزئی نے بتایا کہ آئندہ مالی سال کا بجٹ بہترین اور عوام دوست ہوگا۔ ٹیکسوں میں کمی کی تجویز دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ خسارے کا بجٹ نہیں بلکہ سرپلس بجٹ ہوگا۔ دوسری جانب صوبائی حکومت نے نئے مالی سال کے بجٹ میں 10 فیصد ایڈہاک ریلیف اضافے کا شیڈول تیار کیا ہے، بنیادی نظرثانی شدہ پے اسکیل محکمہ خزانہ کے ذرائع کے مطابق گریڈ 1 کے ملازمین کیلیے 10 فیصد ایڈہاک اضافہ 913 روپے، گریڈ 2 کے ملازمین کیلیے 931 روپے، گریڈ 3 کے ملازمین کیلیے 961 روپے، گریڈ 4 کے ملازمین کیلیے 990 روپے، گریڈ 5 کے ملازمین کیلیے 1026 روپے، گریڈ 6 کے ملازمین کیلیے 1062 روپے، گریڈ 7 کے ملازمین کیلیے 1099 روپے، گریڈ 8 کے ملازمین کیلیے 1138روپے، گریڈ 9 کے ملازمین کیلیے 1170 روپے، گریڈ 10کے ملازمین کیلیے 1216 روپے، گریڈ 11 کے ملازمین کیلیے 1257 روپے، گریڈ 12 کے ملازمین کیلیے 1332 روپے، گریڈ 13 کے ملازمین کیلیے 1426 روپے، گریڈ 14 کے ملازمین کیلیے 1518 روپے، گریڈ 15 کے ملازمین کیلیے 1612 روپے جبکہ گریڈ 16 کے ملازمین کیلیے 1891 روپے اضافہ کیا جائے گا۔