حکومت سیاحوں کی بہتری کیلیے عملی اقدامات کرے ،ڈاکٹرخالد محمود

24

غنی آباد( پ ر) جماعت اسلامی آزاد جموں وکشمیر کے امیر ڈاکٹر خالد محمود خان نے کہا ہے کہ حکومت آمدہ بجٹ میں نوجوانوں کے لیے بلا سود قرضے اور روزگار کے یکساں مواقعے فراہم کرنے کے لیے ٹھوس حکمت عملی تشکیل دے ،آزاد خطہ قدرتی وسائل سے مالا مال یہاں کے نوجوانوں کو با عزت روزگار کے لیے حکومت ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کرے ،ٹورازم کے فروغ کے لیے آزاد کشمیر میں سڑکوں کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ سیاحتی مقامات تک جانے کے لیے سہولیات کی فراہمی یقینی بنائی جائے ،سڑکیں،انفرااسٹریکچر کی بحالی،صحت ،تعلیم کے لیے فنڈز مختص کرے تا کہ خطہ ترقی کی طرف گامزن ہوسکے ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے اپنے دورہ باغ کے دوران غنی آباد میں وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر جماعت اسلامی یوتھ آزادکشمیر کے صدر نثار احمد شائق سمیت دیگر قائدین موجود تھے۔ڈاکٹر خالد محمود خان نے کہاکہ حکومت ٹورازم کے فروغ کے لیے سڑکوں کو بہتر بنا کر سیاحتی مقامات تک سہولیات فراہم کرے تو پاکستان بھر سے سیاح یہاں آئیں گے جس سے آزاد خطہ خوشحالی کی طرف گامزن ہو گا۔انہوں نے کہاکہ آزادخطہ بے پناہ وسائل یہاں ٹورازم،جنگلات اور قدرتی حسن سے مالا مال ہے ،اگر حکومت وسائل کو درست طریقے سے استعمال کرے تو یہاں کے نوجوانوں جو بیرون ممالک جا کر روزگار تلاش کررہے ہیں انہیں اپنے گھر کی دہلیز پر روزگار کے مواقع میسر آسکتے ہیں ، لاکھوں نوجوان بے روزگاری کی وجہ سے مایوس ہو کر ڈگریاں جلانے پر مجبور ہیں حکومت آمدہ بجٹ میں نوجوانوں کے لیے خصوصی پیکج کا اعلان کرنے ساتھ ساتھ ان کے لیے روزگار کے مواقع فراہم کرے ،انہوں نے کہاکہ آزادکشمیر میں ہائیڈرل منصوبوں کے حوالے سے واپڈا سے معاہدات کیے جائیں اور ماحولیات پر پڑھنے والے اثرات کے تدارک کے لیے بھی اقدامات اٹھائے جائیں آزاد خطہ جو 2600میگاواٹ بجلی نیشنل گریڈ کو فراہم کررہا ہے اس خطے کی ضرورت 350میگاواٹ بجلی ہے مگر آزاد کشمیر میں لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے یہاں کے تاجر اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے مشکلات کا شکار ہیں ،حکومت اس مسئلہ کی سنگینی کا نوٹس لے اور واپڈا کے ساتھ معاہدات کیے جائیں تا کہ اسطرح کے مسائل سے نجات مل سکے ۔