ٹنڈوالٰہیار، بجٹ آئی ایم ایف کا شاخسانہ ہے، مسترد کرتے ہیں، انجمن تاجر اتحاد

31

 

ٹنڈوالٰہیار (نمائندہ جسارت) انجمن تاجر اتحاد ٹنڈوالہیار کے صدر عبدالحمید قر یشی نے کہا کہ بجٹ سے قبل ہمیشہ کاروباری طبقہ کو اعتماد لینا چاہیے لیکن افسوس ایسا نہیں کیا گیا اور بجٹ آئی ایم ایف کی ہدایت پر جاری کیا گیاانجمن تاجر اتحاد اس بجٹ کو مسترد کرتی ہے ۔ وفاقی بجٹ عوام دشمن اور انڈسٹری کیلیے سونامی سے کم نہیں تمام بزنس کمینوٹی نے اس بجٹ کو مسترد کردیا ہے ۔حکومت کا یہ مشکل بجٹ ہے کسی بھی لحاظ سے یہ فرینڈلی بجٹ نہیں معاشی ایجنڈے کے لوگ ٹھیک نہیں اس بجٹ سے مہنگائی میں بے تحاشہ اضافہ ہوگا ۔انہوں نے مزید کہا کہ حکومت نے زیرو ریٹڈ سیکٹر پر بھی ٹیکس عائد کردیا جس سے ایکسپورٹ پر منفی اثر پڑے گا۔ پی ٹی آئی حکومت سے کاروباری طبقے کو جو امُیدیں وابستہ تھیں اور تاجروں سے جو وعدے کیے گئے تھے انہیں پورا کرنے کے بجائے کاروباری طبقے کو اعتماد میں لیے بغیر اس طرح کے بجٹ کا اعلان کرنا ٹیکس گزار تاجروں کو مزید نچوڑنے اور دیوار سے لگانے کے مترادف ہے ۔ یہ ایک مشکل بجٹ ہے جس سے پوری تاجر برادری کو مایوسی ہوئی ہے کیونکہ بزنس کمیونٹی کی بجٹ سے توقعات پوری نہیں ہوئیں ۔ایکسائز ڈیوٹی دنیا بھر میں ختم کردی گئی ہے لیکن پاکستان میں بہت زائد شرح میں لگا دی گئی ہے جس سے مہنگائی میں بے پنا ہ اضافہ ہوگا۔پہلے ہی 400ارب روپے کے ریفنڈ ز حکومت کے پاس موجود ہیں جو سیکڑو ں بار وعدوں کے بعد بھی کئی سال سے واپس نہیں کیے گئے اور اگر مزید 400ارب روپے حکومت کے پاس جمع ہوئے تو کیسے ادا کیے جائیں گے ؟معاشی ایجنڈا کے لیے جو لوگ کام کررہے ہیں وہ ٹھیک نہیں ۔ٹیکسٹائل پر 17فیصد ،اسٹیل پر 17فیصد ،آٹو موبائل 10فیصد ،جیولری ماربل پر 17فیصد ڈیوٹی بڑھا دی گئی ہے جبکہ ٹمبر کے حوالے سے کچھ اچھا کام ہوا ہے جس میں لکڑی کی در آمد پر3فیصد سے کم کرکے0فیصد کر دی گئی ہے جبکہ دیگر لکڑی کی آئیٹم میں بھی خاطر خواہ کمی کی گئی ہے لیکن سروسز پر سیلز ٹیکس کو 13فیصد بڑھا کر 16فیصد کردیا گیا ہے ۔حکومت چاہیے کہ جو گاڑیوں کی امپورٹ پر لاگت بڑھائی گئی ہے اس کے عیوض تمام آٹوموبائل انڈسٹریز کو بھی اس بات پر پابند کیا جائے وہ عوام کو مناسب قیمت میں گاڑیاں فروخت کریں چونکہ امپورٹ بند ہونے کے باعث لوکل مینوفیکچر کمپنیاں عوام سے دوگنی قیمت وصول کرہی ہے۔