سی ڈی اے نے الاٹمنٹ دی قبضہ بھی دیگا،اسلام آباد ہائی کورٹ

24

اسلام آباد (اے پی پی)عدالت عالیہ اسلام آباد نے ایف 11/4 میں پلاٹ پر قبضہ نہ دینے کے خلاف دائر درخواست پر جسٹس محسن اختر کیانی نے سماعت کی،عدالت نے ڈائریکٹر لینڈ اور ڈائریکٹر انفورسمنٹ سی ڈی اے کو ذاتی حیثیت میں طلب کرتے ہوئے 15روز میں جواب طلب کر لیا ہے ۔ عدالت نے حکم دیا کہ الاٹمنٹ سی ڈی اے نے کی ہے تو قبضہ بھی سی ڈی اے دے گا۔ عدالت نے بھیکہ سیداں کی متاثرین کی جانب سے پیکج ڈیل بحال کر نے کی درخواست مسترد کر دی ۔ عدالت نے متاثرین کی جانب سے مکمل حقوق ملنے تک حکم امتناع کی درخواست بھی مسترد کر دی۔عدالت نے حکم دیا کہ جو الاٹمنٹ کی ہے ان لوگوں کو قبضہ کیوں نہیں دے رہے ہیں۔سی ڈی اے کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ موقع پر گاؤں موجود ہے اس لیے قبضہ ممکن نہیں ہے ۔ عدالت نے حکم دیا کہ گاؤں گرائیں جو مرضی کریں قبضہ تو دینا پڑے گا، زمین پر لوگ قبضہ کر کے کیسے بیٹھے ہیں۔ عدالت نے ایف الیون قبرستان سے تجاوزارت ختم کر کے رپورٹ عدالت جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 26جون تک ملتوی کر دی۔