برطانیہ کے ساتھ بریگزٹ پر مزید بات نہیں ہوگی‘ یورپی یونین

31

برسلز (انٹرنیشنل ڈیسک) یورپی یونین نے واضح کیا ہے کہ برطانیہ میں نئے وزیر اعظم کے انتخاب کے باوجود بریگزٹ سے متعلق طے کردہ معاہدے میں کوئی تبدیلی نہیں ہو گی۔ برسلز میں صحافیوں سے گفتگو میں یورپی کمیشن کے ایک ترجمان کا کہنا تھا کہ تمام فریق جانتے ہیں کہ کن امور پر اتفاق ہو چکا ہے اور جو امور بھی طے پائے ہیں ان کی یونین کے تمام رکن ممالک نے منظوری دی ہے۔ ترجمان کے مطابق نئے برطانوی وزیر اعظم کے انتخاب کے بعد بھی بریگزٹ پر مزید بات نہیں ہوگی۔ یاد رہے کہ سابق وزیر اعظم تھریسا مے کی حکومت اور یورپی یونین نے برطانیہ کی یونین سے علاحدگی کے بارے میں کئی ماہ طویل مذاکرات کے بعد جس معاہدے پر اتفاق کیا تھا اسے برطانوی پارلیمان 3بار مسترد کر چکی ہے۔ حکمران جماعت کنزرویٹو پارٹی کے ارکانِ پارلیمان کی اکثریت بھی معاہدے کی مخالفت میں پیش پیش ہے۔ تھریسا مے نے معاہدے کی پارلیمان سے منظوری کے لیے حزب اختلاف کی جماعت لیبر پارٹی سے بھی تعاون مانگا تھا، جس کے انکار پر وہ بالآخر رواں ماہ اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئیں۔ تھریسا مے کی جگہ کنزرویٹو پارٹی کی قیادت سنبھالنے کے لیے 10 رہنما میدان میں ہیں۔ یہ امیدوار اپنی مہم کے دوران یورپی یونین مخالف بیانات اور وعدوں کا سہارا لے رہے ہیں۔