پانی کی قلت سے کپاس کے زیر کاشت رقبہ میں سے 45 لاکھ ایکڑکی کمی

24

فیصل آباد (اے پی پی ) پاکستان کسان ویلفیئرکونسل کے چیئرمین چوہدری عبداللطیف سہو نے کہاہے کہ پانی کی شدید قلت کے باعث کپاس کے زیر کاشت رقبہ میں سے 45 لاکھ ایکڑ ،آم کے باغات کا 10لاکھ ایکڑ ،چارہ جات و سبزیات کی فصلات کا 60 لاکھ ایکڑ رقبہ متاثر ہونے کا خدشہ ہے لہٰذاحکومت ڈیموں میں پانی کے بہائو میں کمی ختم کرکے آبپاشی کی ضروریات پوری کرے تاکہ ملک کو متوقع غذائی و زرعی اجناس کے بحران سے بچایاجاسکے۔ انہوں نے کہاکہ بروقت مطلوبہ مقدار میں نہری پانی دستیاب نہ ہونے سے کپاس ، دھان ، آم کی فصلات کو نقصان پہنچا ہے کیونکہ بروقت ٹیوب ویل نہ چلنے اور مطلوبہ مقدار میں آبپاشی نہ ہونے سے فصلات کی کارکردگی متاثر ہوئی ہے جبکہ نہری پانی کی فراہمی بھی نہ ہونے کے برابر رہ گئی ہے ۔انہوںنے کہاکہ جنوبی پنجاب کے علاقے خاص طور پر پانی کی کمی سے متاثر ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ارسانے ڈیموں اور بیراجوں میں پانی کے بہائو میں کمی کرکے جنوبی پنجاب کو پانی کے بحران میں مبتلا کردیاہے۔ انہوںنے کہاکہ حکومت پانی کی کمی کے تدارک اور زرعی ٹیوب ویلوں کیلئے لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ فوری یقینی بنائے تاکہ فصلات کو تباہی سے بچانا ممکن ہو سکے۔