زرداری کی گرفتاری کے خلاف مظاہرے،موٹروے پرٹریفک بند

41

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری کے خلاف پیپلز پارٹی سندھ کی اپیل پر منگل کو کراچی میں بھی بھرپور طریقے سے یوم احتجاج منایا گیا ۔اس موقع پر شہر کے مختلف علاقوں میں پیپلز پارٹی کی جانب سے احتجاجی مظاہروں کا اہتمام کیا گیاجن سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی قیادت جیلوں سے ڈرنے والی نہیں، ہم نیب گردی کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے، آصف زرداری کو سیاسی انتقامی کارروائی کے نتیجے میں گرفتار کیا گیاہے۔سابق صدر کی گرفتاری کے خلاف احتجاج کے دوران سہراب گوٹھ پر مظاہرین نے کراچی حیدرآبادموٹر وے پر ٹریفک کی آمد و رفت بند کرادی جس کے باعث وہاں بدترین ٹریفک جام ہوگیا اور کافی دور تک گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں جبکہ کورنگی کراسنگ پر پیپلزپارٹی کے کارکنوں نے اپنے احتجاج کے دوران دونوں ٹریکس پر ٹریفک معطل کرادی۔اسی طرح لیاری بلوچ چوک پر احتجاجی مظاہرے کے دوران وزیر اعظم عمران خان اور پی ٹی آئی حکومت اورپاکستان کی ایک بیماری عمران نیازی عمران نیازی کے نعرے لگائے گئے۔مظاہرے میں لیاری کی خواتین بھی شریک ہوئیں اورجیالوں نے سابق صدر کی فوری رہائی کا بھی مطالبہ کیا۔حسن اسکوائر پر پیپلز پارٹی کے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے پی پی پی سندھ کے جنرل سیکرٹری وقار مہدی نے کہا کہ کل قانون اور آئین کی دھجیاں اڑائی گئیں اور بغیر کسی آرڈر کے آصف زرداری کو گرفتار کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ پارٹی کے جیالوں نے ضیا کی آمریت برداشت کی، موجودہ حکومت ہمیں خوفزدہ نہیں کرسکتی۔انہوں نے کہا کہ آصف علی زرداری کی گرفتاری کا مقصد انہیں عوامی ایشوز پر بات کرنے سے روکنا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم بلاول زرداری کی آواز پر ہر جگہ پہنچیںگے اور بھرپور احتجاج کیا جائے گا۔پاکستان پیپلز پارٹی کی سمیراانور ،نائمہ بریڑو ،یاسمین مشتاق کی قیادت میں پیپلز پارٹی ضلع جنوبی ،ایسٹ اور کورنگی کی خواتین کارکنان کا سابق صدر اور شریک چیئر مین پی پی پی آصف علی زرداری کی گرفتاری کے خلاف کراچی پریس کلب پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ۔کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے سمیرانور اور نائمہ بریڑو نے کہا کہ گرفتاریاں ،ہتھکڑیاں اور جیل پیپلز پارٹی کے لیے کوئی نئی بات نہیں ۔ہم نے ہمیشہ قانون کا احترام عدلیہ کے فیصلے کو تسلیم کیا ہے مگر ہمارا مطالبہ ہے کہ احتساب بلا تفریق ہونا چاہیے احتساب کی آڑ میں اداروں کو استعمال کرکے انتقام ناقابل قبول ہے قانون سب کے لیے بر ابر ہو علیمہ خان ،علیم خان اور جہانگیر ترین کے لیے الگ اور سیاسی مخالفوں کے لیے الگ قانون یہ انصاف نہیں انتقام ہے ۔بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے گو نیازی گو کے نعرے لگوائے۔