زرداری کی گرفتاری کیخلاف ملک بھر میں احتجاج، سندھ میں یوم سیاہ منا یا گیا

78
حیدرآباد: پیپلزپارٹی کے کارکنان سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری کیخلاف پریس کلب کے باہر احتجاج کررہے ہیں
حیدرآباد: پیپلزپارٹی کے کارکنان سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری کیخلاف پریس کلب کے باہر احتجاج کررہے ہیں

 

کراچی،اسلام آباد(خبر ایجنسیاں) پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے آصف علی زرداری کی گرفتاری کے خلاف جیالوں نے ملک بھر میں احتجاجی مظاہرے شروع کر تے ہوئے کہا ہے کہ حکومت انتقامی کارروائیوں پر اتر آئی ہے اور اس کے باوجود بھی ہمارے حوصلے پست نہیں ہوں گے ۔قومی احتساب بیورو
نے جعلی اکاونٹس کیس میں ضمانت مسترد ہونے پر آصف زرداری کو گزشتہ روز گرفتار کیا جس کے خلاف پیپلز پارٹی کی جانب سے سندھ میں یوم سیاہ منایا۔صوبے بھر میں سیکیورٹی بھی ہائی الرٹ کر دی گئی ہے جب کہ امن و امان کی صورتحال کو برقرار رکھنے کے لیے پولیس اور رینجرز کی جانب سے حیدرآباد میں مشترکہ فلیگ مارچ اور گشت کیا گیا۔باجوڑ میں آصف علی زرداری کی گرفتاری کے بعد مظاہرین نے پریس کلب کے سامنے احتجاج کیا جہاں مقررین کا کہنا تھا کہ حکومت اپنی انتقامی کارروائیوں پر اتر آئی ہے اور اس کے باوجود ہمارے حوصلے پست نہیں ہوں گے۔دوسری جانب ٹنڈو محمد خان میں کارکنان اپنے گھروں سے باہر نکل آئے اور پھلیلی پل پر مظاہرین نے ٹائر جلا کر سڑک کو بلاک کردیا جبکہ گھوٹکی میں بشیر آباد سے مین چوک اوباڑو تک جیالوں کی جانب سے احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ٹھٹھہ میں ٹا ئون کمیٹی سے مین شاہراہ تک کارکنوں نے ریلی نکالی گئی جبکہ گھارو میں بھی احتجاج کیاگیاہے۔ادھر بدین میں آصف زرداری کی گرفتاری خلاف ٹنڈو باگو میں جیالوں نے پریس کلب کے سامنے احتجاج کیا اور مہران چوک سے ایوان صحافت تک مارچ کیا جب کہ میرپور خاص میں سٹی آفس کے سامنے احتجاج کیا گیا۔مظفر گڑھ میں کچہری چوک پر بھی مظاہرین کی جانب سے احتجاج کیا گیا۔پشاور،کراچی،اسلام آباد،لاہور،کوئٹہ سمیت مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے جبکہ سڑکوں پر ٹائر جلاکر حکومت اور نیب کیخلاف نعرے بازی بھی کی گئی۔مظاہرین نے عمران خان اور چیئرمین نیب جاوید اقبال کے پتلے اور پوسٹر بھی نذرِ آتش کیے۔
احتجاجی مظاہرے