مسافروں اورعملے کا تحفظ اولین ترجیح ہے‘ ترجمان پی آئی اے

50

کراچی(اسٹاف رپورٹر) پی آئی اے کے ترجمان نے لندن سے اسلام آباد آنے والی پرواز میں مسافر خاتون کی جانب سے ہنگامی استعمال کا دروازہ کھولنے کی خبر کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی آئی اے ایوی ایشن کے بین الاقوامی ضابطوں کے تحت اپنے مسافروں ، طیاروں اور کریو کی حفاظت کو اولین ترجیح دیتی ہے ۔ فلائٹ سیفٹی، گرائونڈ پر حفاظتی امور اور دفتری امور میں حفاظتی اقدامات کی سختی سے پابندی کی جاتی ہے۔ ترجمان نے کہا ہے کہ مانچسٹرائر پورٹ پر پی آئی اے کی پرواز PK702 میں ایک مسافرنے غلطی سے طیارے کا ایمرجنسی دروازہ کھول دیا جس سے ایمرجنسی سلائیڈ کھل گئی۔ ترجمان نے میڈیا میں نشر اور شائع ہونے والی خبروں کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مذکورہ پرواز پر کیبن کریو کی کوئی کمی نہیں تھی اور پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کے قوانین کے مطابق کریوپرواز کی ضروریات کے مطابق تھا۔ پی آئی اے نے مذکورہ پرواز پر حفاظتی امور کی سختی سے پابندی کرتے ہوئے تقریباً40 مسافروں کو سامان سمیت طیارے سے اتار دیا کیونکہ طیارے کے ایک حصے میں ایمرجنسی سلائیڈ نہ ہونے کے باعث مسافروں کی حفاظت پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جا سکتا تھا۔ پرواز سے اتارے جانے والے مسافروں کو پی آئی اے کی جانب سے مانچسٹر میں ہوٹل فراہم کیا گیا اور ان کو اگلی دستیاب پرواز سے پاکستان پہنچا دیا گیا۔