چہیتے کا اقتدار بچانے کیلیے پاکستان کی جگ ہنسائی کی گئی، اسفندیار

54

پشاور (آن لائن) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کہا ہے کہ ملک میں سول مارشل لاء ہے اور اپنے چہیتے کھلاڑی کے اقتدار کو دوام بخشنے کی خاطر وہ کچھ کیا گیا جس پر آج پاکستان کی جگ ہنسائی ہو رہی ہے، عوام بخوبی جانتے ہیں کہ مسلط حکومت نے اس بار بجٹ میں ان کی مزید چیخیں نکالنی ہیں، اس لیے بجٹ سے ایک روز قبل آصف زرداری کو گرفتار کر لیا گیا ہے تاکہ آصف زرداری کی گرفتاری کی آڑ میں عوام پر مہنگائی کا بم گرایا جا سکے، ۔ پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کی گرفتاری پر اپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک میں اداروں کا کردار مشکوک اور جانبدارانہ ہے، چہیتے کھلاڑی کی راہ ہموار کرنے کی غرض سے اس کے راستے سے رکاوٹیں ہٹائی جا رہی ہیں اور سیاسی مخالفین کو یکے بعد دیگرے جیلوں میں ڈالا جا رہا ہے۔ آصف علی زرداری کی گرفتاری سے انتقام کی بو آ رہی ہے۔ اداروں کے کردار پر آج ملک کا بچہ بچہ انگلیاں اٹھا رہا ہے۔ ہم نے پہلے ہی کہا تھا کہ عوامی مینڈیٹ کو سبوتاژ کر کے مسلط کردہ شخص ملک چلانے کا اہل نہیں۔ احتساب کے نام نہاد نظام کو چہیتے کے مخالفین کیلیے ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جا رہا ہے۔ ملک میں جنگل کا قانون ہے اور گزشتہ 10 ماہ سے ہر ایک اہم مرحلے پر بریکنگ نیوز دی جا رہی ہے تا کہ عوام کی توجہ اصل مسائل سے ہٹائی جا سکے۔ اسفندیار ولی خان نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ عوام کو ریلیف اور سہولتیں دینے میں ناکام ترین حکومت اور اس کے ہمنوا ملک کے مستقبل کے ساتھ کھیل رہے ہیں جو کسی بھی صورت ملکی مفاد میں نہیں۔ ملک کمزور اور عالمی سطح پر تنہا ہو چکا ہے۔ ایسی صورتحال میں ذمے داروں کو ہوش کے ناخن لینے چاہییں اور انتقام کی سیاست سے گریز کرنا چاہیے۔