عثمان پبلک اسکول سسٹم ملک کی پہچان اور جماعت اسلامی کا فخر ہے،حافظ نعیم

103

کراچی(اسٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ عثمان پبلک اسکول سسٹم جماعت اسلامی کا فخر ہے اور ہمارے ملک کی پہچان ہے۔ طاغوتی نظام کے مقابلے کے لیے عثمان پبلک اسکول بچوں کو بہترین تعلیم وتربیت فراہم کررہا ہے۔ عثمان پبلک اسکول بنانے کا مقصد یہی تھا کہ جو لوگ دنیا میں اللہ کے دین اور نظام کے غلبے کے لیے میدان عمل میں ہوں ان کی تربیت اور بنیاد بہت مضبوط خطوط پر ہو ۔یہاں سے نکلنے والے معاشرے کی حقیقی قیادت بنیں ،زمین پر اللہ کے نظام کے قیام کے لیے جدو جہد کریں اسی لیے اس ادارے کا موٹو’’خلیفۃ اللہ فی الارض کی تیاری ‘‘ ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی کے زیرانتظام چلنے والے تعلیمی ادارے عثمان پبلک اسکول سسٹم کی روایتی تقریب ’’عثمانینز عید ملن‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ تقریب سابق طالب علموں کے لیے ان کے کیمپسز میں منعقد کی جاتی تھی تاہم اس بار ایک منفرد انداز میں رضوان پارک فیڈرل بی ایریا بلاک نمبر 14 میں منعقد کی گئی۔ عید ملن کی اس تقریب کی خاص بات عثمان پبلک اسکول سسٹم کے 30 سال مکمل ہونے پر طلبہ کی بڑی تعداد میں شرکت بھی تھی۔ 1989ء میں قائم شدہ عثمان پبلک اسکول سسٹم سے تعلیم حاصل کرنے والے پاکستان سمیت آج دنیا بھر میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوارہے ہیں۔ تقریب سے ادارے کے ایگزیکٹیوڈائریکٹر سید معین الدین نیئر، اسلامی جمعیت طلبہ پاکستان کے معتمد عام حمزہ صدیقی سمیت مختلف طلبہ نے بھی خطاب کیا ۔اس موقع پر عثمان پبلک اسکول سسٹم کا پہلا ترانہ’’ عثمانینز ہیں ہم‘‘ بھی پیش کیا گیا۔حافظ نعیم الرحمن نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ جماعت اسلامی وہ تحریک ہے جو توسیع دعوت ِ دین اور عوامی خدمت کے میدان ، تعلیم و تدریس کے شعبے اور عوام کے مسائل حل کرنے کے لیے کوشاں ہے۔ جماعت اسلامی کا موازنہ کسی مسلکی و مذہبی گروہ یا کسی لسانی و علاقائی تنظیم کے ساتھ نہیں کیا جا سکتایہ کوئی وقتی تحریک نہیں بلکہ اقامت ِ دین کی ایک مسلسل تحریک ہے۔ یہ جماعت نبی کریم ؐکا وہ وژ ن رکھتی ہے جو قرآن نے ہمیں دیا ہے۔ عثمان پبلک اسکول کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ یہ بچوں کی تربیت اس طرح کرتا ہے کہ ہر ایک طالب علم اللہ کے دین اور اس کی بندگی کے لیے ہر شعبہ ہائے زندگی میں تیار رہے۔ آج آپ تمام فارغ التحصیل طلبہ اپنا جائز ہ لیں کہ معاشرے میں اُن کا کیا کردار ہے اور وہ حق کے غلبے کے لیے کیاکام کررہے ہیں ، یہ صرف سیاسی و سماجی مسئلہ نہیں یہ ہمارے دین و دنیا کا اور آخرت کا معاملہ ہے کہ ہم اللہ کے سامنے سرخرو ہو کر جائیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام اساتذہ و انتظامیہ تعریف کے مستحق ہیں جنہوں نے آج اتنی پیاری محفل سجائی ہے۔امید ہے کہ یہ سلسلہ آئندہ بھی جاری رہے گا ۔سید معین الدین نیئر نے عید ملن میںآنے والے تمام سابق طلبہ کو خوش آمدید کہااورکہا کہ لیڈرز آف مسلم امہ کو دیکھ کر خوشی ہوتی ہے ، آپ روشن ستارے ہیں جو اپنے اپنے اداروں میں بہترین صلاحیتوں کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔ آپ معاشرے میں ’’الحق‘‘ کا ساتھ دینے والوں کی پہچان رکھتے ہیں جس سے آپ کے اساتذہ اور ادارے کا مقصد پورا ہو جاتا ہے۔ حمزہ صدیقی نے کہا کہ مجھے اپنے اسکول اور یہاں کے اساتذہ سے بہت محبت ہے ، آج اپنے دوستوں سے مل کر اور اس بات پر بھی خوشی ہوئی کہ اس ادارے کے 30 سال مکمل ہورہے ہیں ۔ 30 سال قبل ایک عظیم مقصد کے لیے قائم کردہ ادارہ آج اس شہر میں 30 شاخیں رکھتا ہے ہزاروں طلبہ اس سے مستفید ہو رہے ہیں۔ آج سب کیمپسز کے سابق طلبہ کو ایک ہی گرائونڈ میں جمع کیا گیا۔الحمدللہ آج میں فخر کرتا ہوں کہ اس اسکول نے مجھے ایک مقصدِ حیات اور بلند نصب العین دیا ۔میری دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ میرے اساتذہ اور اس ادارے کو اور ترقی عطا کرے ۔