احتساب کا ہونا چاہئے یہی جماعت اسلامی کا موقف ہے،لیاقت بلوچ

121

لاہور(نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اور مرکزی مجلس قائمہ سیاسی امور کے صدر لیاقت بلوچ نے آصف زرداری کی گرفتاری پر اپنے ردعمل میں کہاہے کہ آصف زرداری پر منی لانڈرنگ کے مقدمات تھے اور وہ زیر تفتیش تھے ، عدالت نے پہلے بھی ان کی ضمانت لی اب نہیں لی تو معاملات عدالت میں ہیں اور عدالت کے فیصلے ہی چلیں گے ۔ انہوںنے کہاکہ حکومت نے احتساب کے معاملے میں پسند و ناپسند میں صرف اپوزیشن جماعتوں کو ترجیح دی ہے ۔ پاناما لیکس کے 436 افراد سمیت کرپشن کے میگا اسکینڈلز ، قرضے معاف کرانے والوں کو عمران خان بھلا بیٹھے ہیں ۔ احتساب تو سب کا ہونا چاہیے اور جماعت اسلامی کا اصولی موقف یہی ہے کہ پاکستان کرپشن فری ہو ، سب کا بلاتفریق احتساب ہواور قومی دولت واپس آئے ۔علاوہ ازیں لیاقت بلوچ نے گلاب دیوی گلبرگ میں جے آئی یوتھ اور جماعت اسلامی کی مشترکہ عیدملن پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان حکومت کی مایوس کن کارکردگی نے نوجوانوں کے جوش و جذبے کو شدید دھچکا لگایا ہے ۔ مال و دولت ، سیاسی بے وفائوں اور ریاستی اداروں کی طاقت سے اقتدار کا تجربہ بار بار ناکام ہواہے اور اب بھی قلیل مدت میں ناکام منظر پیش کر رہاہے ۔ نوجوان متحد ہوں ، اسلام اور پاکستان کی محبت کی بنیاد پر ظلم ، جبر اور کرپٹ نظام کو پلٹ دیں ۔ اسلامی اور خوشحال پاکستان ہی مسائل کا حل ہے ۔ جماعت اسلامی 16 جون کو لاہور سے مہنگائی ، بے روزگاری اور آئی ایم ایف سے خفیہ ، بدترین غلامی کے معاہدے کے خلاف عوامی مارچ کا آغاز کرے گی ۔ عوامی جذبوں کی ترجمانی کے لیے ملک گیر عوامی مارچ اور احتجاج کے لائحہ عمل کا 16 جون کو امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق اعلان کریں گے ۔ اس کے علاوہ لیاقت بلوچ نے لاہور میں جمعیت علما اسلام کے وفد سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ جماعت اسلامی دینی جماعتوں اور قائدین سے ریاست مدینہ کے نظام اور اسلامی قوانین کے تحفظ کے لیے تعلقات برقرار رکھے گی ۔ عمران خان حکومت متنارع انتخابی نتائج پر زبردستی قائم کی گئی ہے ۔ مہنگائی ، بے روزگاری اور سیاسی انتشار کا سونامی ہی نااہل اور ناکام حکومت کو لے ڈوبے گا ۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ ملک میں خودکشی ، غیرت کے نام پر قتل اور بدکرداری کی بنیاد پر قتل کی بڑھتی رفتار تشویشناک ہے ۔ معاشرہ اندرونی زوال اور تباہی سے دوچار ہے ۔ قومی قیادت معاشرتی اور سماجی تباہی کے سدباب کی فکر کرے ۔لیاقت بلوچ نے معروف مذہبی اسکالر علامہ عباس کمیلی کے انتقال پر بھی دکھ اور غم کا اظہار کیاہے۔