محکمہ داخلہ پنجاب نے نواز شریف کے معالج کو ملاقات سے روک دیا

61

لاہور(نمائندہ جسارت) محکمہ داخلہ پنجاب نے کوٹ لکھپت جیل میں قید سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کو جیل میں نواز شریف سے ملاقات کرنے سے روک دیا ہے۔ ڈاکٹر عدنان نے نواز شریف کے طبی معائنے کے لیے ملاقات کی اجازت طلب کی تھی، تاہم ذاتی معالج کا کہنا ہے کہ گزشتہ روز نواز شریف کا بلڈ ٹیسٹ کیا گیا تھا تاحال اس کی رپورٹ انہیں فراہم نہیں کی گئی۔ نواز شریف کی جیل میں صحت خراب ہے اور انہیں علاج کی ضرورت ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ سابق وزیر اعظم کی فوری طور پر ای سی جی کرانے کی ضرورت ہے۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ روز سابق وزیراعظم نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے چیف سیکرٹری پنجاب کے نام ایک خط ارسال کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کی زندگی کو شدید خطرات لاحق ہیں اور ان کا تواتر کے ساتھ طبی معائنہ ضروری ہے اس لیے ان کے طبی معائنے کی اجازت دی جائے، اس سے قبل بھی 2 خط ارسال کیے جاچکے ہیں لیکن نواز شریف کے جیل میں طبی معائنے کی اجازت نہیں دی گئی ۔