علی وزیر،محسن داوڑ کی گرفتاری سے قبل اطلاع دی گئی تھی،اسد قیصر

62

اسلام آباد (خبر ایجنسیاں ) اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا کہنا ہے کہ مجھے علی وزیر اور محسن داوڑ کی گرفتاری سے قبل اطلاع دی گئی تھی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اسد قیصر کا کہنا تھا کہا کہ دونوں ایم این ایز کے پروڈکشن آرڈر سے متعلق میرے پاس کوئی فائل نہیں آئی۔ ہم علی وزیر اور محسن داوڑ کے معاملے کو قانون کے مطابق دیکھیں گے۔یاد رہے کہ 26مئی کو محسن داوڑ نے علی وزیراور اپنے ساتھیوں کے ہمرہ پاک فوج کی چیک پوسٹ پرحملہ کیا تھا جس میں 1فوجی شہید جبکہ 5زخمی ہو گئے تھے۔پاک فوج کی جوابی کارروائی پر 3حملہ آور ہلاک جبکہ 10زخمی ہو گئے تھے۔سکیورٹی اداروں نے حملہ کرنے پر علی وزیراور ان کے ساتھیوں کو گرفتار کر لیا تھا جبکہ محسن داوڑ فرار ہو گئے تھے جس کے بعد انہوں نے غیر ملکی میڈیا پر پاکستان اور افواجِ پاکستان کے خلاف انٹرویو بھی دیا تھا۔بعدازاں سکیورٹی فورسز نے انہیں شمالی وزیرستان سے گرفتار کر لیا تھا جس کے بعد انہیں کمشنر آفس بنوں منتقل کر دیا گیا تھا۔اس سے پہلے پاک فوج پر بزدلانہ حملے کے بعد محسن داوڑ کا روپوش ہونے کے بعد پہلا بیان سامنے آیا تھا کہ پاک فوج وزیرستان سے نکل جائے۔ محسن داوڑنے نامعلوم مقام پر غیر ملکی میڈیا کو دیے گئے انٹرویو میں کہا تھا کہ پاک فوج وزیرستان سے چلی جائے۔