شہباز شریف این آر او کے ذریعے ملک سے فرار ہوئے،شیخ رشید احمد

145
لاہور: وزیر ریلوے شیخ رشید احمد پریس کانفرنس کررہے ہیں
لاہور: وزیر ریلوے شیخ رشید احمد پریس کانفرنس کررہے ہیں

لاہور (نمائندہ جسارت)وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے ایک بار پھر شہباز شریف کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے دعوی کیا ہے کہ شہباز شریف این آر او کے ذریعے ملک سے بھاگے۔لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیخ رشید نے ایک بار پھر اپنی توپوں کا رخ ن لیگ کی طرف کر دیا۔شیخ رشید نے کہا کہ شہباز شریف کو این آر او کی بھیک مانگتے دیکھا ہے اور پہلے ہی بتا چکا ہوں کہ شہباز شریف این آر او کے ذریعے بھاگے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اندر سے نواز اور آصف زرداری ملے ہوئے ہیں، آصف زرداری سوچتے ہیں کہ شہباز جا سکتے ہیں تو وہ کیوں نہیں۔سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ شاہد خاقان سب سے زیادہ شور مچا رہے ہیں، جب ایل این جی کی نئی قیمتیں سامنے آئیں گی تو سب کچھ سامنے آ جائے گا۔چیئرمین نیب کے حوالے سے بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ آڈیو وڈیو چھوڑیں، ان لوگوں کی چیخیں سنیں۔شیخ رشید نے کہا کہ یہ لوگ چیئرمین نیب کے مستعفی ہونے کا مطالبہ ہی اس لیے کر رہے ہیں کہ نئے چیئرمین پر حکومت اپوزیشن کا اتفاق ہو گا ہی نہیں، ریفرنس دائر نہیں ہوسکیں گے اور ان کے مزے لگے رہیں گے۔پیپلز پارٹی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ آصف زرداری کی بہن وزیر صحت ہیں اور سندھ میں ایڈز کا مرض پھیل رہا ہے، لاڑکانہ میں ایڈز کیسز پر انہیں استعفادینا چاہیے۔آئی ایم ایف سے قرض لینے سے متعلق سوال پر وزیر ریلوے نے کہا کہ آئی ایم ایف کے پاس جانا حکومت کی مجبوری ہے لیکن ملک میں مہنگائی اور بے روزگاری کی وجہ گینگ آف فور ہے۔ شیخ رشید نے کہا کہ مودی کے دوبارہ وزیراعظم بننے پر پاکستان کو ذمے داری کا مظاہرہ کرنا پڑے گا ۔شیخ رشید احمد نے سال2020ء کو مسائل کا سال قرار دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو محتاط رہنے کی ضرورت ہے کیونکہ پاکستان پر ایران اور عراق جیسا وقت بھی آسکتا ہے۔وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے عید الفطر کے موقع پر 3 خصوصی ٹرینیں چلانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا عید کے روز ٹرینوں پر سفر کرنے والے مسافروں کے لیے کرایہ 50 فیصد کم ہو گا۔وفاقی وزیر ریلوے کہا کہ سرسید ایکسپریس کا ایک پرزہ نہ ملنے کی وجہ سے اس کا افتتاح 15 دن کے لیے موخر کر دیا ہے۔ریلوے میں ملازمین کی بھرتیوں کے حوالے سے بات کرتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ریلوے میں بھرتیوں کیلیے 10 سے 12 لاکھ درخواستیں موصول ہوئی ہیں، بھرتیاں قرعہ اندازی کے ذریعے کی جائیں گی۔کراچی میں سرکلر ریلوے کی زمین واگزار کرانے سے متعلق سوال پر شیخ رشید کا کہنا تھا کہ عید کے 15 دن تک کراچی میں ریلوے کی زمین واگزار کروانے کا اپنا ٹاسک مکمل کر لیں گے۔انہوں نے کہا کہ سرکلر ریلوے سے متعلق سندھ حکومت مجھے بلا وجہ نشانہ بنا رہی ہے، ہم نے ریلوے ٹریک کے دونوں طرف کی مقررہ جگہ خالی کرا کر دینی ہے۔شیخ رشید نے کہا کہ اگر آج سندھ حکومت مجھے 207 ارب روپے دیدے تو میں کل ہی سرکلر ریلوے پر کام شروع کر دوں، سرکلر ریلوے کو سیاست کی نظر نہ کیا جائے،شیخ رشید نے کہا کہ 30 جون سے پہلے پاکستان ریلوے کی رپورٹ عوام کے سامنے پیش کر دیں گے۔ جس میں خسارہ کم ہے اور آمدن زیادہ ہے۔