ایف بی آر کے اقدامات سے ٹیکس دہندگان کا اعتماد بحال ہورہا ہے

119

کراچی(اسٹاف رپورٹر)فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری(ایف پی سی سی آئی) کے سابق نائب (آباد) کے سابق چیئرمین محمد حنیف گوہر نے کہا ہے کہ پاکستان کے ٹیکس نظام میں اصلاحات لانے کے لیے ٹیکس اتھارٹی کو سیکیورٹی اینڈ ا یکسچینج کمیشن پاکستان اور مسابقتی کمیشن کے طرح خودمختار بنایا جائے۔ چیئرمین ایف بی آر، شبر زیدی کے عہدہ سنبھالنے کے بعد حالیہ اقدامات سے ٹیکس دہندگان کا حکومت پر اعتماد بحال ہورہا ہے ۔ حنیف گوہر کا کہنا تھا کہ چیئرمین ایف بی آر کی جانب سے انکم ٹیکس کمشنر کے پاس بینک اکائونٹس منجمد کرنے اور ان میں سے ٹیکس وصولی کرنے کا اختیار ختم کرنے سے کاروباری افراد اور حکومت میں عدم اعتماد کی فضا کا خاتمہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ اسوقت پاکستان میں 350 ارب روپے سے زائد ٹیکسوں میں کمی کا سامنا ہے۔ٹیکس وصولیوں کو بڑھانے کے لیے حکومت کو چاہیے کہ سب سے پہلے ٹیکس وصولی کے نظام میں ٹیکس دینے والے اور ٹیکس وصول کرنے والے افسران کے درمیان براہ راست تعلق کو ختم کرنے کے لیے ایف بی آر کو مکمل طور پر آٹومیشن پر لایا جائے ۔ان کا کہنا تھا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے استعمال سے ٹیکس نظام میں شفافیت آئے گی۔