بریگزٹ میں ناکامی ،برطانوی وزیراعظم کا مستعفی ہونے کا اعلان

124
لندن: برطانوی وزیراعظم ٹین ڈاؤننگ اسٹریٹ کے باہر پریس کانفرنس میں مستعفی ہونے کا اعلان کرتے ہوئے دل برداشتہ نظر آرہی ہے
لندن: برطانوی وزیراعظم ٹین ڈاؤننگ اسٹریٹ کے باہر پریس کانفرنس میں مستعفی ہونے کا اعلان کرتے ہوئے دل برداشتہ نظر آرہی ہے

لندن (انٹرنیشنل ڈیسک) برطانوی وزیراعظم تھریسا مے نے عہدہ چھوڑنے کا اعلان کردیا۔ خبررساں اداروں کے مطابق مے نے جمعہ کے روز اپنی سرکاری رہایش گاہ ٹین ڈاؤننگ اسٹریٹ کے باہر صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ برطانوی پارلیمان کے ارکان کو تین بار بریگزٹ معاہدے پر قائل کرنے میں ناکام ہونے کے بعد وزارت عظمی کے عہدے سے استعفا دے رہی ہیں۔ تھریسا مے نے کہا کہ ان کے لیے یہ امر ہمیشہ گہرے دکھ کا باعث رہے گا کہ وہ بریگزٹ پر کامیاب کارکردگی نہ دکھا پائیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کا عہدہ سنبھالنے کے بعد میری یہی کوشش رہی کہ برطانیہ صرف چند لوگوں کو فائدہ نہ دے، بلکہ سب کے لیے ہو۔ ان کا کہنا تھا میں نے ریفرنڈم کے نتائج کو عزت دینے کی کوشش کی اور ہمارے انخلا کے لیے شرائط پر مذاکرات کیے۔ مے نے کہا کہ میں نے ارکان پارلیمان کو قائل کرنے کے لیے ہر ممکن کوشش کی کہ وہ اس معاہدے کی حمایت کریں، لیکن افسوس میں اس میں کامیاب نہیں ہو سکی۔ انہوں نے رندھی ہوئی آواز میں کہا کہ میرے لیے اب یہ واضح ہے کہ ملک کے بہترین مفاد میں ایک نیا وزیر اعظم اب ان کوششوں کی سربراہی کرے۔ اس لیے میں یہ اعلان کر رہی ہوں کہ 7 جون کو میں کنزرویٹو اور یونینسٹ پارٹی کی سربراہی سے مستعفی ہو رہی ہوں۔ خیال رہے کہ نیا پارٹی لیڈر چننے کا عمل تھریسا مے کے استعفا کے اگلے ہفتے شروع ہو گا۔ جسے بھی پارٹی لیڈر چنا جائے گا وہ بعد میں وزیر اعظم کا عہدہ سنبھال لے گا۔ ساتھ ہی برطانوی وزیراعظم بننے کی دوڑ شروع ہو جائے گی۔ نئے وزیراعظم کے لیے تھریسا مے نے اس خواہش کا اظہار کیا کہ وہ ان کوششوں میں کامیاب ہو جائے جن میں تھریسا مے ناکام ہو گئی ہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ ان کے بعد آنا والا وزیر اعظم شاید بریگزٹ پر اتفاق رائے حاصل کر لے، تاہم ان کا کہنا تھا کہ اتفاق رائے اسی وقت ہو گا جب فریقین سمجھوتا کریں گے۔ دوسری جانب یورپی یونین نے کہا ہے کہ برطانوی وزیر اعظم کا 7 جون سے مستعفی ہونے کا فیصلہ یورپی یونین کی بریگزٹ سے متعلق پوزیشن میں کسی قسم کی کوئی تبدیلی نہیں لائے گا۔یورپی کمیشن کی ترجمان مینہ اندریوا نے یومیہ پریس بریفنگ میں کہا کہ یورپی کمیشن کے سربراہ ژاں کلاڈ ینکر نے مے کے استعفے پر مسرت کا اظہار نہیں کیا۔ انہوں نے بتایا کہ ینکر تھریسا مے کے ساتھ کام کرنے پر خوش تھے اور ان کی کارکردگی کو سراہتے تھے، تاہم حالیہ پیش رفت کے بعد اب وہ نئے وزیر اعظم سے بھی اسی سطح پر تعلقات استوار کریں گے اور باہمی امور میں تیزی لانے کی کوشش کریں گے۔