کویتی کمپنی پاکستان میں تیل و گیس کی تلاش کیلئے 98 لاکھ ڈالرز کی سرمایہ کاری کرے گی

71

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک/اے پی پی ) کویتی کمپنی پاکستان میں تیل و گیس کے ذخائر کی تلاش کے لیے 98 لاکھ ڈالرز کی سرمایہ کاری کرے گی۔ پیٹرولیم ڈویژن اعلامیے کے مطابق کویتی کمپنی کی ذیلی کمپنی پنجاب اور خیبر پختونخوا میں تیل و گیس تلاش کرے گی۔ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ 98 لاکھ ڈالرزکی ابتدائی سرمایہ کاری ہو گی۔ دونوں ممالک کے درمیان تیل و گیس کے ذخائر کی تلاش کے لائسنس اجرا معاہدے پر دستخط بھی ہو گئے ہیں۔ وزارت پیٹرولیم کے مطابق ملک میں تیل و گیس کی تلاش پر محنت ضرور رنگ لائے گی‘ معاہدے کو عملی جامہ پہنانے سے غیر ملکی سرمایہ کاری کو وسعت ملے گی۔ قبل ازیں وزیراعظم عمران خان سے کویت پیٹرولیم کے سی ای او نے وفد کے ہمراہ ملاقات کی۔ وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کے دوران کویت پیٹرولیم کے سربراہ نے پاکستان میں کاروباری سرگرمیاں بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا اور پاکستان میں تیل و گیس کی تلاش کے منصوبے سے آگاہ کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے کویت پیٹرولیم کے سربراہ اور وفد کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ حکومت کویت پیٹرولیم کی کاروباری آپریشنز میں معاونت جاری رکھے گی۔ وزیراعظم نے کہا کہ حکومت تیل و گیس کے شعبے کے لیے نئی پیٹرولیم پالیسی پر کام کر رہی ہے‘ نئی پیٹرولیم پالیسی میں غیر ملکی کمپنیوں کو مراعات دی جا رہی ہیں‘ نئی پیٹرولیم پالیسی میں سرمایہ کاری کی راہ میں رکاوٹیں دور کی جا رہی ہیں۔ پیٹرولیم ڈویژن نے بدھ کو کر تھار پاکستان کے ساتھ مکھڑ بلاک پر پیٹرولیم کنسیشن معاہدہ اور ایکسپلوریشن لائسنس پر دستخط کیے۔ کرتھار پاکستان کو فپیک کویت کی ذیلی کمپنی ہے۔ وفاقی وزیر پیٹرولیم عمر ایوب خان بھی اس موقع پر موجود تھے۔ عمر ایوب خان نے واضح کیا کہ اس معاہدے کو عملی جامہ پہنانے سے غیر ملکی براہ راست سرمایہ کاری کو وقعت ملے گی۔ اس کے علاوہ یہ معاہدہ توانائی کی طلب و رسد میں موجود فرق کو بھی ختم کرے گا۔