کراچی کے مسائل حل کرنے میں وفاق اور سندھ سنجیدہ نہیں،وسیم اختر

79

کراچی (اسٹا ف رپورٹر) میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ موجودہ معاشی صورتحال کے باعث تاجر حضرات سخت پریشانی کا شکار ہیں لہٰذا اس مسئلے کو ٹھوس بنیادوں پر فوری حل کرنے کی ضرورت ہے، کراچی پاکستان کا تجارتی و معاشی حب ہے مگر عدم توجہی کے باعث مختلف مسائل کا شکار ہے بدقسمتی سے اس شہر کے مسائل حل کرنے کے لیے وفاقی اور صوبائی حکومتیں سنجیدہ نظر نہیں آتیں، کراچی اور گوادر سی پورٹ ہونے کے باعث دنیا بھر کے لیے مرکز نگاہ ہیں لہٰذا ان پر خصوصی توجہ کی ضرورت ہے، سی پیک کے منصوبے کے باعث گوادر کو خاص اہمیت حاصل ہے یہاں کے لیے ایسی پالیسی مرتب کرنے کی ضرورت ہے جس سے مقامی افراد کو روزگار کے زیادہ سے زیادہ مواقع میسر آئیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو یونین کلب میں گوادر بلڈرز اینڈ ڈیولپرز ایسوسی ایشن کے زیراہتمام منعقدہ افطار ڈنر میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔میئر کراچی وسیم اختر نے کراچی سرکلر ریلوے کے آپریشنل ہونے کے حوالے سے عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس حوالے سے خاطر خواہ کام ہوتا نظر نہیں آتا، میئر کراچی نے کہا کہ دنیا بھر میں سی پورٹ سٹیز کو خصوصی اور منفرد حیثیت حاصل ہوتی ہے اور ان کے لیے الگ بجٹ مختص کیا جاتا ہے مگر پاکستان میں ایسا نہیں ہوتا جوکہ قابل افسوس ہے، میئر کراچی نے کہا کہ شہر کی ترقی اور مسائل کے حل کے لیے سنجیدہ کوششوں اور عملی اقدامات کی ضرورت ہے شہر کی بہتری کے لیے سب کو اپنا حصہ ڈالنا ہوگا اور اس شہر کو اون کرنا ہوگا،اس موقع پر ایسوسی ایشن کے چیئر مین اقبال احمد خان بلوچ نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گوادر میں حکومت کی غیرواضح پالیسی کے باعث رئیل اسٹیٹ کے سرمایہ کاروں کو مشکلات کا سامنا ہے، تقریب سے وائس چیئرمین محمود احمد خان نے بھی خطاب کیا اور میئر کراچی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے انہیں یادگاری شیلڈ پیش کی۔