کرسی مار کر جج کا سر پھوڑنے والے و کیل کو 18 سال قید کی سزا

190

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے جڑانولہ عدالت میں کرسی مار کر سول جج انچارج کا سر پھوڑنے وکیل کو 18 سال 6 ماہ قیدکی سزا سنادی۔

تفصیلات کے مطا بق 25اپریل019مقدمہ کی سماعت کے دوران عمران ایڈووکیٹ نے طیش میں آکر مقدمے کی سماعت کر نےوالے سینئر سول جج انچارج خالد محمود وڑائچ کے سر میں کر سی مار سر پھوڑ دیا تھا دہشت گردی کی عدالت کے جج نے جمعرات کو مقدمے کی سماعت کے بعد فیصلہ سناتے ہو ئے وکیل عمران منج کو 18 سال 6 ماہ قید کی سزا سناتے ہوئے ڈھائی لاکھ روپے جرمانہ اور ہرجانہ ادا کرنے کا بھی حکم دیا۔

وائس چیئر مین پنجاب بار کو نسل شاہ نواز گجر نے پنجاب بھر میں فیصلے کے خلاف ہڑتال کے ہڑتال کی کال دےدی انہوں نے کہا کہ فیصلہ جلد بازی اور عجلت میں کیا گیا سزا دینے سے قبل قانونی تقا ضے پورے نہیں کیے گئے عجلت میں دی گئی سزاکی مزمت کر تے ہیںپنجاب بھر وکلاءآج عدا لتوں میں پیش نہیں ہو نگے عدا لتی امور مکمل طور ٹھپ رہیں گے۔