انگلینڈ کیخلاف ون ڈے سیریز ،ناقص بولنگ کو مد نظر رکھ اسکواڈ میں تین تبدیلیاں کی گئیں،انضمام الحق

75
لاہور: پی سی بی کے چیئرمین سلیکشن کمیٹی انضمام الحق ورلڈ کپ کے لیے قومی اسکواڈ کا اعلان کررہے ہیں
لاہور: پی سی بی کے چیئرمین سلیکشن کمیٹی انضمام الحق ورلڈ کپ کے لیے قومی اسکواڈ کا اعلان کررہے ہیں

لاہور(جسارت نیوز )ورلڈ کپ کیلئے قومی ٹیم میں4 تبدیلیا ں انگلینڈ کے خلا ف ون ڈے سیریز میں شکست اور ناقص بولنگ کو مد نظر رکھ کر کی گئیں ۔محمد عامر جو کہ ناقص بولنگ پرفارمنس کی وجہ سے پاکستان کی طرف سے اپریل میں ورلڈ کپ کیلئے اعلان کردہ 15 رکنی ااسکواڈ میں شامل نہیں تھے کو انگلینڈ کے دورہ میں اس لئے شامل کیا گیا تھا کہ ان کی انگلینڈ میں بہتر پرفارمنس دیکھ کر انہیں ورلڈ کپ کے اسکواڈ میں شامل کیا جائے گا لیکن محمد عامر چکن پاکس کی وجہ سے انگلینڈ کے خلاف ایک بھی ون ڈے میچ نہیں کھیل سکے لیکن اس کے باجود انہیں ورلڈ کپ کے اسکواڈ میں شامل کرلیا گیا اور چیف سلیکٹر انضمام الحق کی طرف سے کہا گیا کہ محمد عامر ایک تجربہ کار بولر ہے اور اسے انگلینڈ کی کنڈیشنز میں بولنگ کا وسیع تجربہ ہے۔محمد عامر گزشتہ 14ون ڈے میچز میں صرف 5 وکٹیں حاصل کرسکے تھے ۔اسی طرح بلے باز آصف علی بھی محمد عامر کی طرح ورلڈ کپ کے ابتدائی اسکواڈ میں شامل نہیں تھے لیکن انہوں نے انگلینڈ کیخلاف 2 ون ڈے میچز میں نصف سنچریاں بنائیں تو انہیں چیف سلیکٹر نے ورلڈ کپ کے اسکواڈ میں شامل کرلیا ۔چیف سلیکٹر کا کہنا تھا کہ نچلے نمبرز پر بیٹنگ کیلئے آصف علی بہترین بلے باز ثابت ہوسکتا ہے ۔وہاب ریاض جن کا نام ورلڈ کپ کے پہلے 23کھلاڑیوں میں بھی نام شامل نہیں تھا لیکن انگلینڈ کے خلاف بولر ز کی ناقص کارکردگی کی وجہ سے انہیں ورلڈ کپ اسکواڈ میں شامل ہونے کا موقع ملا ۔وہاب ریاض 2 سال قومی ٹیم کا حصہ نہیں تھے اور انہوں نے اپنا آخری ون ڈے انٹرنیشنل میچ چیمپئنز ٹرافی ٹورنامنٹ میں بھارت کے خلاف ایبجسٹن میں کھیلا تھا جس میں وہ ان فٹ ہوگئے تھے تاہم وہاب ریاض نے پاکستان سپر لیگ اور ڈومیسٹک کرکٹ میں اچھی بولنگ کی تھی ۔چیف سلیکٹر انضمام الحق کا کہنا تھا کہ وہاب ریاض اچھی ریورس سوئنگ کرلیتا ہے جبکہ پرانی گیند سے بھی اچھی بولنگ کرتا ہے اور انگلینڈ کی وکٹوں پر وہ اچھا بولر ثابت ہوگا ۔فہیم اشرف اور جنید خان انگلینڈ کے خلاف اچھی بولنگ نہیں کرسکے جس کی وجہ سے انہیں ورلڈ کپ اسکواڈ سے باہر کیا گیا۔