ٹنڈوالٰہیار، بد ترین بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری، شہری پریشان

43

 

ٹنڈوالٰہیار (نمائندہ جسارت) وفاقی حکومت اور وفاقی وزیر پانی و بجلی کے رمضان المبارک میں بجلی کی لوڈشیڈنگ نہ کرنے کے بلند بانگ دعوے کام نا آئے، حیسکو ٹنڈوالہٰیار نے رمضان المبارک کے مہینے میں کیے گئے دعووں کی دھجیاں اڑا دیں، ٹنڈوالہٰیار اور گردونواح میں طویل لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے روزہ دار سحری و افطار میں بے حد پریشانی کے عالم میں افطار و سحر کرنے پر مجبور ہیں، حیسکو ٹنڈوالہٰیار کی جانب سے رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں بھی 10 سے 12 گھنٹوں کی طویل لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے جبکہ باقی گھنٹوں میں حیسکو کی جانب سے وولٹیج کی کمی بیشی بھی روز کا معمول بن گئی۔ طویل لوڈشیڈنگ اور وولٹیج کی کمی کی وجہ سے روزہ دار پریشان ہیں اور ان کا فریجوں میں رکھا ہوا سامان وولٹیج کی کمی اور لوڈشیڈنگ کی وجہ سے خراب ہورہا ہے، جبکہ وولٹیج کی کمی کی وجہ سے پانی کی موٹریں اور پنکھے ناچلنے کے برابر ہے۔ اس شدید گرمی میں حیسکو کی جانب سے کی جانے والی طویل لوڈشیڈنگ اور وولٹیج کی کمی کے باعث روزہ دار پانی کی بوند بوند کو ترس گئے جبکہ ٹنڈوالہٰیار کے گائوں گوٹھوں کے لوگوں کا کہنا ہے کہ ہمارے علاقے میں دو سے تین دن تک بجلی غائب رہتی ہے جبکہ ٹنڈوالہٰیار شہر کے مختلف علاقے شیدی پاڑہ، زمان شاہ محلہ، انڑ پاڑہ، پاکستان چوک، جناح چوک، قلعہ ایریا، میرواہ روڈ، پریم نگر، شہبار کالونی ودیگر علاقوں میں حیسکو کی جانب سے وولٹیج 150 سے 175 تک سپلائی کیا جارہا ہے، جس کی وجہ سے بجلی سے چلنے والی اشیا آئے دن خراب ہورہی ہیں اور شکایتوں کے باوجود وولٹیج کی کمی کو پورا نہیں کیا جارہا۔ انہوں نے وفاقی وزیر پانی و بجلی عمر ایوب ودیگر حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ رمضان المبارک کے اس بابرکت مہینے میں ہونے والی طویل لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کیا جائے اور جہاں وولٹیج کی کمی ہے اسے پورا کیا جائے۔