رینجرز کی بریگیڈ اور فیروز آباد میں کارروائی، 6 ڈکیت گرفتار

82

کراچی (اسٹاف رپورٹر) رینجرزنے خفیہ ذرائع سے ملنے والی معلومات کی بنیاد پربریگیڈ اور فیروز آباد کے علاقوں میں کارروائی کرتے ہوئے 6 ملزمان کو گرفتارکرلیا۔ملزمان ڈکیتی کی متعدد وارداتوں میں ملوث ہیں۔ ان کے قبضے سے اسلحہ، ایمونیشن اور مسروقہ سامان برآمد کرکے انہیں قانونی کارروائی کیلیے پولیس کے حوالے کر دیا گیا ہے۔رینجرز نے شہریوں سے اپیل کی ہے کہ ایسے عناصر کے بارے میں اطلاع فوری طور پر قریبی چیک پوسٹ،رینجرز ہیلپ لائن 1101 یا رینجرز مددگار واٹس ایپ نمبر03162369996 پر کال یا ایس ایم ایس کے ذریعے دیں،اطلاع فراہم کرنے والے کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے گا۔علاوہ ازیں اندرون سندھ پانی چوری کے خلاف آپریشن کے دوران پاکستان رینجرز ضلع بدین کے علاقے تلہار میں سلطانی برانچ RD-72سے RD-100 کے ایریامیں پانی چوری کے لیے لگائے گئے غیر قانونی کنکشنز، موگھے اور نکوں کے خلاف محکمہ آبپاشی اور پولیس کے ساتھ مشترکہ آپریشن کیا۔آپریشن کے دوران مجموعی طور پر 9کلو میٹر نہری علاقے کے 23 مقامات سے پانی کے غیرقانونی کنکشن،موگھے اور نکوں کو ہٹایا گیا جبکہ پانی چور ی میں ملوث27 افراد کے خلاف متعلقہ تھانے میں ایف آئی آر درج کر لی گئی۔ علاوہ ازیںآئی جی سندھ پولیس ڈاکٹر کلیم امام نے شعبہ تفتیش پربرہمی کا اظہار کرتے ہوئے حکم جاری کیاہے کہ جو انویسٹی گیشن آفیسر درست تحقیقات نہیں کرے گا وہ گھر جائے گا، کیس حل نہ کرنے والے کو عہدے پر رہنے کا کوئی حق نہیں ۔آئی جی سندھ نے سندھ بھر کے تمام ایڈیشنل آئی جیز اور ڈی آئی جیز کو حکم دیا ہے کہ جو ایس آئی او کسی بھی کیس کو حل نہ کرسکے یا اس کی کارکردگی سے ایسا محسوس ہو کہ کیس حل کرنے میں وہ دلچسپی نہیں لے رہا تو اسے عہدے سے فوری طور پر ہٹادیا جائے۔اجلاس میں آئی جی سندھ نے کہاکہ شہریوں کو بلاجواز تنگ نہ کیا جائے اور انہیں انصاف کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔