صنعتوں میں رمضان المبارک کے دوران لوڈشیڈنگ مسترد کرتے ہیںِنکاٹی

32

کراچی (اسٹاف رپورٹر)نارتھ کراچی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ انڈسٹری ( نکاٹی) نے کے الیکٹرک کی جانب سے نارتھ کراچی صنعتی علاقے میںلوڈشیڈنگ کو مسترد کرتے ہوئے ماہ رمضان میں بلاتعطل بجلی کی فراہمی کا مطالبہ کیاہے اور گورنر سندھ عمران اسماعیل ،وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ سے اپیل کی ہے کہ وہ صورتحال کا فوری نوٹس لیتے ہوئے صنعتکاروں کو اس مشکل سے نجات دلوانے میں اپنا کردار ادا کریں ۔ نکاٹی کے سرپرست اعلیٰ کیپٹن اے معیزخان اورقائمقام صدر فیصل شابوکی زیرصدارت ہونے والے ہنگامی اجلاس میں منیجنگ کمیٹی کے اراکین اور ممبران نے رمضان المبارک میں نارتھ کراچی صنعتی علاقے میںرات 11:30 سے صبح 6:30 بجے تک بجلی کی بندش کے فیصلے کی سخت الفاظ میںمذمت کرتے ہوئے اس فیصلے کو ماننے سے انکار کردیا ہے۔اجلاس میں چیئر مین کے الیکٹرک سب کمیٹی محمد نسیم اختر،اراکین منیجنگ کمیٹی اور ممبران کثیر تعداد میںشریک ہوئے۔اجلاس کے شرکاء کا کہنا تھا کہ زائد پیداواری لاگت کی وجہ سے صنعتیں پہلے ہی مالی بحران کا شکار ہیں لہٰذا صنعتوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ سے پیداواری سرگرمیاں بری طرح متاثر ہوں گی اور صنعتیں تباہ ہو کر رہ جائیں گی کیونکہ موجودہ حالات میںصنعتیں پیداواری عمل میں کسی بھی صورت سمجھوتہ نہیں کرسکتیں جس کی وجہ برآمدی آرڈرز کی بروقت تکمیل ہے کیونکہ اگر برآمدی آرڈر زکی بروقت تکمیل نہ کی گئی تو آرڈرز منسوخ ہونے کے خدشات ہیں لہٰذا کے الیکٹرک صنعت دشمن اقدامات کرنے سے گریز کرے اورصنعتی پیداوار ی سرگرمیوںکو بغیر کسی رکاوٹ جاری رہنے دیا جائے۔نکاٹی کے سرپرست اعلیٰ کیپٹن اے معیزخان اورقائمقام صدر فیصل شابوکا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے باورکرایاگیا ہے کہ بجلی کی سپلائی وافر مقدار میں موجود ہے اس کے باوجود صنعتوں کو بجلی کی فراہمی بلاجواز بند کرکے صنعتی نظام کو تبا ہ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جس کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر بے روزگاری بڑھے گی۔انہوں نے کے الیکٹرک سے فوری طورپر صنعتوں میں لوڈشیڈنگ کا فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ برآمدی آرڈرز کی بروقت تکمیل کے لیے صنعتوں کوبلاتعطل بجلی کی فراہمی یقینی بنائی جائے تاکہ برآمدات کو فروغ حاصل ہو اور ملک میں خوشحالی ہے۔