امریکی فوج کے معاون افغانوں کو ویزا دینے کا بل کانگریس میں پیش

55

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی سینیٹرز نے امریکی فوج کے لیے کام کرنے والے افغان کارکنوں کے لیے خصوصی ویزے جاری کرنے کا ایک قانونی بل کانگریس میں پیش کردیا، جس کی منظوری سے 4 ہزار افغان شہریوں کو امریکی ویزا حاصل ہو سکے گا۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق ویزا پالیسی پر نظر ثانی کرنے کا بل ری پبلکن اور ڈیموکریٹک ارکان کانگریس کی جانب سے پیش کیا گیا، جس میں واضح کیا گیا کہ امریکی فوج کے لیے کام کرنے والے افغان باشندوں کی زندگیوں کو خطرہ لاحق ہے اور انہیں امریکی مدد درکار ہے۔ امریکی سینیٹرز کی جانب سے افغان شہریوں کو ویزا دینے کی نئی کوششیں مثبت ثابت ہو سکتی ہیں۔ بل کی منظوری کے بعد ابتدائی طور پر 4 ہزار افغان تارکین وطن کے لیے خصوصی ویزے جاری کیے جائیں گے، اس تعداد کا تعین 30 ستمبر 2019ء کو ختم ہونے والے وفاقی مالی سال کے ساتھ کیا گیا ہے۔ بل میں ان مسائل کو کم کرنے کی نشاندہی بھی کی گئی ہے، جو ان افغان باشندوں کو امریکی ویزے کے حصول میں درپیش ہیں۔ امریکی فوج کے لیے کام کرنے والے افغان باشندوں کو 2018ء میں 1650 ویزے منظور کیے گئے تھے۔ افغانستان میں امریکی مشن کے کمانڈر جنرل آسٹن ملر نے کہا ہے کہ افغانستان میں امریکی کامیابی کے لیے افغان شہریوں کو خصوصی تارکین وطن ویزے جاری کرنا بہت ضروری ہے۔