یومِ نکبہ پر مظاہرے‘ اسرائیلی فائرنگ سے درجنوں فلسطینی زخمی

136
غزہ: فلسطینیوں کے قافلے اسرائیل سے متصل سرحد کی جانب بڑھ رہے ہیں‘ صہیونی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہونے والوں کو اسپتال منتقل کیا جارہا ہے
غزہ: فلسطینیوں کے قافلے اسرائیل سے متصل سرحد کی جانب بڑھ رہے ہیں‘ صہیونی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہونے والوں کو اسپتال منتقل کیا جارہا ہے

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) 1948ء میں قابض صہیونیوں کے ہاتھوں فلسطینیوں کی جلاوطنی کے خلاف ہر سال منائے جانے والے یوم نکبہ پر فلسطین سمیت دنیا بھر میں مظاہرے کیے گئے۔ فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق بدھ کے روز غزہ، مغربی کنارے اور کئی ممالک میں اسرائیل کے خلاف احتجاج کیا گیا۔ اس موقع پر غزہ میں ہزاروں فلسطینیوں نے قافلوں کی صورت میں اسرائیلی سرحد کی جانب مارچ کیا۔ قابض فوج نے پرامن مظاہرین پر براہ راست گولیاں اور آنسو گیس کے شیل برسائے، جس کے نتیجے میں درجنوں فلسطینی زخمی ہو گئے۔ اس موقع پر مغربی کنارے کے کئی شہروں میں بھی ہڑتال رہی۔ یاد رہے کہ فلسطینی قوم ہر سال 15 مئی کو یوم نکبہ مناتی ہے۔ اسرائیل کے یوم تاسیس کے اگلے روز منائے جانے والے اس دن کا مقصد اسرائیل کے ناجائز قبضے اور فلسطینیوں کی جلاوطنی کو اجاگر کرنا ہے۔ علاوہ ازیں اسرائیلی پولیس نے مسجد اقصیٰ کے قریب باب العامود کے علاقے میں لوہے کے بیریئر نصب کر دیے ہیں، جس کے نتیجے میں فلسطینی شہریوں اور نمازیوں کی ماہ صیام کے دوران سرگرمیاں محدود کردی گئیں۔ اسرائیلی فوج فلسطینی نوجوانوں کو علاقے میں رمضان المبارک کے متعلق کسی بھی قسم کے عمل اور سرگرمی سے روکنے کی کوششوں میں ہے، جس کی وجہ سے قابض اہل کاروں اور فلسطینیوں کے درمیان جھڑپیں ہونا معمول بن چکا ہے۔ اسی دوران 37 صہیونی آبادکاروں نے مسجداقصیٰ پردھاوا بولا اور اس کے صحن کے چکر لگانے کے بعد السلسلہ دروازے سے باہر نکل گئے۔ دوسری جانب قابض اسرائیلی فوج نے غزہ کی سرحد عبور کرتے ہوئے 2 فلسطینیوں کو گرفتار کرلیا۔