سجاول، گریڈ بیس کی خالی سیٹ اوپی ایس افسران کے لیے فٹ بال بن گئی

28

سجاول (نمائندہ جسارت) محکمہ صحت سندھ میں ڈسٹرکٹ ہیلتھ افسر ضلع سجاول کی گریڈ بیس کی خالی سیٹ اوپی ایس افسران کے لیے فٹ بال بن کر رہ گئی ہے اور ضلعی آفس محکمہ صحت کا کام ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے۔ اس ضمن میں معلوم ہوا ہے کہ ڈسٹرکٹ ہیلتھ افسر کی گریڈ بیس کی سیٹ پر کئی سال سے اہل افسر کا تقرر نہیں ہوسکا ہے اور گریڈ انیس کے ڈاکٹروں کے ذریعے ضلعی آفس کا کام چلایا جارہا ہے۔ گزشتہ مہینے گریڈ انیس کے اے ڈی ایچ او سجاول ڈاکٹر حسین عمرانی ریٹائرڈ ہوگئے جن کے پاس کئی سال سے ڈی ایچ او کی چارج بھی حوالے تھی۔ انہوں نے بھی چارج گریڈ انیس کے اے ڈی ایچ او ڈاکٹر نذیر احمد میمن کے حوالے کردی، تاہم کچھ دنوں کے بعد ہی گریڈ انیس کے اے ایم ایس تعلقہ اسپتال سجاول ڈاکٹر غلام رسول بلوچ نے اپنا آرڈر کراکے ان سے چارج بھی لے لیا، لیکن کچھ دنوں کے بعد ایک اور گریڈ انیس کے ڈاکٹر کا ہونے والا آرڈر رکوا کر گریڈ انیس ہی کی ڈاکٹر شہناز خواجہ نے اپنا آرڈر کراکے چارج بھی لے لیا ہے۔ ڈی ایچ او سجاول کی اسامی پر گریڈ بیس کے اہل افسر کی مقرری کے بجائے گریڈ انیس کے اوپی ایس ڈاکٹر اپنی تقرری کے لیے دوڑیں لگارہے ہیں اور اس کے لیے سیکرٹریٹ سے لیکر سیاسی اثرو رسوخ بھی استعمال کیا جارہا ہے۔ مذکورہ سیٹ پر اپنا بندہ لگانے کے لیے سندھ کے حکمران جماعت کی مقامی قیادت میں بھی اختلافات پیدا ہوگئے ہیں۔