آصف زرداری کی ضمانت ،عید کے بعد سڑکوں پر حکومت مخالف تحریک چلانے کا اعلان

83
اسلام آباد: سابق صدر آصف زرداری ہائیکورٹ سے کرپشن کیسز میں ضمانت ملنے کے بعد کارکنوں کو ہاتھ ہلا کر جواب دے رہے ہیں
اسلام آباد: سابق صدر آصف زرداری ہائیکورٹ سے کرپشن کیسز میں ضمانت ملنے کے بعد کارکنوں کو ہاتھ ہلا کر جواب دے رہے ہیں

اسلام آباد(نمائندہ جسارت) اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق صدر مملکت اور پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کے خلاف جاری 6 کرپشن کے مقدمات میں عبوری ضمانت منظور کرلی۔ عدالت نے فریال تالپور کی عبوری ضمانت میں بھی 11 جون تک توسیع کردی۔جسٹس عامرفاروق نے ریمارکس دیے کہ لگتاہے طلبی اورضمانتوں کا سیلاب آرہا ہے۔سماعت کے بعد عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے آصف زرداری نے اعلان کیا کہ وہ اب پارلیمنٹ میں نہیں بلکہ عید کے بعد سڑکوں پر حکومت مخالف تحریک چلائیں گے۔انہوں نے کہا کہ نیب اور معیشت ایک ساتھ نہیں چل سکتے، حکو مت نا کام ہو چکی ہے، ملک کے حا لا ت سب کے سامنے ہیں، مہنگائی عروج پر ہے، غریب بے چارہ فاقوں پر مجبور ہے، دہشت گردی پھرسے سر اٹھا رہی ہے جبکہ حکو مت نیب کے ساتھ مل کر اپو زیشن کو جیلو ں میں بند کر نے پر لگی ہوئی ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ ماضی کی اور موجودہ ایمنسٹی اسکیم میں کوئی فرق نہیں،جس کے پاس پیسے ہیں وہ بلیک منی کو وائٹ کرلے گا۔اس اسکیم کا کسی نہ کسی کو تو فائدہ ہوگا لیکن اس کا فائدہ قوم کو نہیں ہوگا۔بلاول کی طلبی کے سوال پر سابق صدر نے کہا کہ وہ بے نظیر اورمیرا بیٹا ہے اسے بھی انہی انگاروں پرچلنا ہے۔شریک چیئرمین پی پی نے کہا کہ نوازشریف سے کوئی رابطہ نہیں ہوا، میرے پاس ان کا نمبر نہیں ہے۔ان سے سوال کیا گیا کہ کیا نواز شریف کو آپ نے اکیلا نہیں چھوڑ دیا؟ جس پر سابق صدر نے کہا کہ ماشا اللہ وہ ہشاش بشاش رہ رہے ہیں اور وہ اپنی خواہش کے مطابق اپنے شہر لاہور میں رہ رہے ہیں۔ زرداری نے تحریک انصاف کے رہنما علیم خان کی ضمانت پر رہائی کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے مبارکباد بھی دی۔