دہشت گردی میں اضافہ نیشنل ایکشن پلان کا ازسر نو جائزہ لینے کا فیصلہ

100

اسلام آباد( آن لائن )سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے دہشت گردی کی کارروائیوں میں ایک بارپھر اضافہ ہونے پرتشویش کااظہار کرتے ہوئے نیشنل ایکشن پلان کا ازسرنوجائزہ لینے کا فیصلہ کرلیا ۔چیئرمین کمیٹی سینیٹر رحمن ملک کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہائوس میں منعقد ہوا۔قائمہ کمیٹی نے گوادر پی سی ہوٹل میں دہشت گردی کے واقعے اور بلوچستان کی اہم عمارتوں کی سیکورٹی کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کی رپورٹ وزارت داخلہ سے طلب کر لی۔چیئرمین کمیٹی رحمن ملک نے کہا کہ 3دنوں میں بلوچستان میں دہشت گردی کے 2حملے ہوئے جس میں متعدد افراد شہید ہوئے، نیشنل ایکشن پلان کا از سرِنو جائزہ لیا جائے گا جس میں چاروں صوبائی آئی جیز ، ہوم سیکرٹریز اور دیگر متعلقہ اداروں سے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد پر بریفنگ حاصل کی جائے گی ۔ ان کا کہنا تھا کہ دشمن قوتیں بلوچستان میں دہشت گردی کے ذریعے پاکستان کو کمزور کرنا چاہتی ہیں، دشمن اپنی مذموم کوششوں میں ناکام ہوگا، شہداء کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستانی لڑکیوں کی چینی باشندوں سے شادیوں سے متعلق ایف آئی اے سے بریفنگ لینے کا بھی فیصلہ کیا ہے،یہ حساس معاملہ ہے،دشمن کی سازشوں کو ناکام بنائیں گے۔