بحری گزرگاہ پر بڑھتی کشیدگی خطرناک ہے،حکومت سفارتی محاذ پر فعال ہو،لیاقت بلوچ

60

لاہور(نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ بحیرہ عرب بحری گزر گاہ پر بڑھتی کشیدگی خطرناک ہے ، حکومت سفارتی محاذ پر فعال ہو ۔یہ بات انہوں نے لاہور میں تاجر برادری کے وفد سے ملاقات کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ لیاقت بلوچ نے کہا کہ آئی ایم ایف معاہدہ غلامی کا قلادہ ہے ، پوری قوم نے اسے مسترد کردیاہے ۔ اپنے عوام پر بے اعتمادی اور آزادی سلب کرنے والی استعماری طاقتوں کے سامنے سرنڈر قابل قبول نہیں ۔ عمران حکومت کی مکمل نااہلی ناکامی ہے ۔آئی ایم ایف معاہدے کی شرائط پر پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں مکمل بحث کی جائے ۔ انہوںنے کہاکہ منتخب ادارے نمائشی بنادیے گئے ہیں ،اختیارات ، انتظام و انصرام غیر منتخب قوتوں اور ٹیکنوکریٹس کے قبضے میں چلا گیاہے ۔ پوری قوم کو یقین ہوتا جارہاہے کہ عمران خان اس ناکارہ اور پھٹیچر ٹیم کے ساتھ ملک کو بدترین معاشی بحران سے نہیں نکال سکتے ۔ماضی میں یہ مشہور تھاکہ بے نظیر سمجھتی ہیں سنتی نہیں ، نوازشریف سنتے ہیں سمجھتے نہیں اور اب زبان زد ِعام ہے کہ عمران خان نہ سنتے ہیں نہ سمجھتے ہیں ۔تبدیلی سے وابستہ عوامی توقعات تیزی سے ڈوبتی جارہی ہیں ۔لیاقت بلوچ نے کوئٹہ میں بم دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ دشمن مسلسل سیکورٹی اہلکاروں کو ٹارگٹ بنا کر سی پیک منصوبے کو ناکام بنانا چاہتے ہیں ۔ قوم متحد ہے اور دشمن ناکام ہوگا ۔