پولیس کا یہی حال رہا تو زندگی بھر اسٹریٹ کرائم ختم نہیں ہوںگے،سندھ ہائیکورٹ

27

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائی کورٹ میں اسٹریٹ کرائم کی بڑھتی ہوئی وارداتوں کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی،ایس ایس پی کورنگی نے جواب عدالت میں جمع کرادیا،ایف آئی اے کا نمائندہ موجود نہ ہونے پر عدالت برہم، سماعت 16 جون تک ملتوی کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر حاضری یقینی بنانے کا حکم۔درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ ملزمان سرعام شہر میں اسلحہ لے کر گھومتے ہیں،پولیس ان کے خلاف کارروائی کرنے میں ناکام ہوچکی ہے،شہر میں ایک بار پھر اسٹریٹ کرائم بڑھ رہے ہیں، فون چھیننے کے واقعات بھی بڑھتے جا رہے ہیں، سندھ حکومت، پولیس جرائم روکنے میں ناکام ہوچکی۔درخواست میں چیف سیکرٹری، سیکرٹری داخلہ، آئی جی،ڈی جی رینجرز اور چیف سی پی ایل سی ودیگرکو فریق بنایا گیا ہے جب کہ ڈی آئی جیز پولیس کی جانب سے جواب جمع نہ کرانے پر عدالت نے برہمی کا اظہار کیا۔ عدالت نے کہا کہ ایف آئی اے نے بھی گزشتہ سماعت پر جواب داخل کرانے کی یقین دہانی کرائی تھی۔ جسٹس آفتاب احمد نے کہا کہ اسٹریٹ کرائم کی وارداتوں کی میڈیا پر خبریں دیکھ پر بہت دکھ ہوتا ہے،لگتا ہے پولیس کا یہی حال رہا تو پوری زندگی اسٹریٹ کرائم ختم نہیں ہوںگے۔