بحریہ ٹائون راولپنڈی کیس: فریقوں سے قابل قبول حل اور تجاویز طلب

29

اسلام آباد (اے پی پی) عدالت عظمیٰ نے بحر یہ ٹاؤن راولپنڈی سے متعلق کیس میں فریقوںسے قابل قبول حل اور تجاویزطلب کرتے ہوئے مزید سماعت 23 مئی تک ملتوی کر دی ہے اورکہاہے کہ شاملات اراضی کی شناخت ایک سوالیہ نشان ہے، جس کی نشاندہی کر کے عدالت کو آگاہ کیا جائے اگراس حوالے سے حکم امتناع سامنے آیا توعدالت اس کوبھی دیکھ لے گی۔منگل کوجسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی ۔ اس موقع پرجسٹس شیخ عظمت سعید نے کہاکہ شاملات اور جنگلات کی اراضی الگ معا ملات ہیں اوردونوں کے لیے قوانین بھی الگ ہیں، دونوں معاملات کو حل کرنے کے لیے الگ سے تجاویز دینا ہوں گی ،سماعت کے دوران بحریہ ٹائون کے وکیل سید علی ظفرنے اپناموقف پیش کرتے ہوئے کہاکہ شاملات اور جنگلات کی زمین میں فرق ہے، ہمیں اس کے مطابق آگے بڑھناہے ، جس پرعدالت نے ان سے کہاکہ ہمیں اس معاملے کا آسان حل نہ دیا جائے، بلکہ آپ اپنا جواب جمع کرائیں اورجواب الجواب جمع کرانے کے لیے پنجاب حکومت کو اس کی کاپی فراہم کی جائے ۔بعدازاں مزید سماعت ملتوی کردی گئی۔